Home / اسلام / خَطراتِ بَحر و بَر اور خَدشاتِ پیر و سَر !

خَطراتِ بَحر و بَر اور خَدشاتِ پیر و سَر !

🌹#العلمAlilm🌹 علمُ الکتاب 🌹
اَلاَنعام ، اٰیت 63 تا 67 🌹
خَطراتِ بَحر و بَر اور خَدشاتِ پیر و سَر !! 🌹 ازقلم 🌷🌷خترکاشمیری
🌹 علمُ الکتاب اُردو زبان کی پہلی تفسیر آن لاٸن ھے جس سے روزانہ 75 ہزار سے زیادہ اَفراد اِستفادہ کرتے ہیں !! 🌹🌹🌹
🌹 براۓ مہربانی ھمارے تمام دوست اپنے تمام دوستوں کے ساتھ قُرآن کا یہ پیغام شیٸر کریں !! 🌹🌹🌹🌹🌹🌹🌹🌹
🌹 اٰیات و مفہومِ اٰیات ! 🌹
🌹 قل
من ینجیکم
من ظلمٰت البر والبحر
تدعونہ تضرعا وخفیہ لٸن
انجینا من ھٰذہ لنکونن من الشٰکرین 63
قل للہ ینجیکم منہا ومن کل کرب ثم انتم تشرکون 64
قل ھوالقادر علٰی ان یبعث علیکم عذابا من فوقکم او من تحت
ارجلکم او یلبسکم شیعا ویذیق بعضکم باس بعض انظر کیف نصرف الاٰیٰت
لعلھم یفقھون 65 وکذب بہ قومک وھوالحق قل لست علیکم بوکیل 66 لکل نبامستقر
وسوف تعلمون 67
اے ھمارے رسُولِ جہان ! اہلِ جہان سے اِک ذرا یہ تو پُوچھیں کہ کون ھے وہ جو تمہیں صحرا و سمندر کے اَندھے خطرات سے بچاکر باہر لاتا ھے اور کون ھے وہ جس کو تُم دِل کو دہلا دینے والے اِن حالات میں اور جسم و جان کو ہِلا دینے والے اِن مقامات پر کبھی بلند آہوں اور کبھی دَبی دَبی سِسکیوں کے ساتھ چُپکے چُپکے اِس خیال سے پُکار رھے ھوتے ھو کہ اگر آج وہ ہمیں اِس آفت سے نجات دے دے تو ھم ہمیشہ کے لیۓ اُس کے شُکر گزار بندے بَن جاٸیں گے ، اے ھمارے رسُول جہان ! آپ کے سامنے تو اِن دِل کے ہارے ھوۓ اور مصیبت کے مارے ھوۓ اہلِ لوگوں کی زبان نہیں کُھلے گی ، اِس لیۓ آپ خود ہی اِن کو بتا دیں کہ تُم سب کو بَحر و بر میں پیر و سر کے اِن سارے خطرات سے وہی اللہ نجات دلاتا ھے جس کے ساتھ تُم آفات سے نجات پانے کے بعد دُوسروں کو شریکِ نجات بناتے ھو ، اے ھمارے رسُولِ جہان ! آپ اِن اہلِ لوگوں کو یہ بھی بتا دیں کہ اگر اللہ تُمہارے اَکڑے ھوۓ سَروں کو اُڑانے کے لیۓ بلندی سے تُم پر کوٸ آفت ڈھا دے یا تُمہارے زمین پرجَمے ھوۓ پیروں کو اُکھاڑنے کے لیۓ زمین ہی سے کوٸ موجِ بُلا اُٹھا دے یا تمہیں گھیر گھار کر مارنے کے لیۓ تُمہاری اَگاڑی پِچھاڑی سے کوٸ لَشکر و سپاہ لاکر تُم کو ایک دُوسرے کے ساتھ لَڑا بِھڑا دے تو تُم ایک دُوسرے کے ہاتھوں سے مرنے کے سوا کُچھ بھی نہیں کر سکو گے اور اے ھمارے رسُولِ جہان ! غور کیجیۓ کہ ھم اِن شَر آشنا دلوں کو خیر آسا دِل بنانے کے لیۓ کس کس طرح بَدل بَدل کر ایک دلیل کے بعد ایک اور دلیل لا تے ہیں لیکن ھمارے اِن سارے دلاٸل کے بعد بھی آپ کی قوم نے ھمارے اِس سَچے کلام کو جُھٹلا دیا ھے ، لہٰذا آپ اَب اپنی پُوری قوم پر یہ بات پُوری طرح واضح کردیں کہ میں جہان میں تُمہارا نماٸندہ نہیں ھوں بلکہ اُسی جہان گر اور جہان گیر کا نماٸندہ ھوں جس نے مُجھے اِس عظیم کام کے لیۓ اپنا نماٸندہ بنایا ھے ، تُم لوگوں کو مُجھ سے اپنی سزا سُننے کی جلدی نہیں ھونی چاہیۓ کیونکہ کسی واقعے کے وقوعہ پزیر ھونے ، اُس واقعے کے وقوع پزیر ھونے کی خبر بننے اور اُس خبر کے ظہُور پزیر ھو نے میں وقت لگتا ھے !
🌹 خَطاۓ اَعمال اور خوفِ اَحوال ! 🌹
انسان طبعا ایک ایسی خود پسند و سَہل آسا مخلُوق ھے جس کو اپنے سزاۓ اَعمال کا تو کُچھ زیادہ خوف نہیں ھوتا لیکن اپنی اِبتلاۓ اَحوال کا بہت زیادہ خوف ھوتا ھے ، اِس لیۓ خُدا کی یہ عجوبہِ روز گار مخلوق مُسرت کے سارے لَمحات میں چین کی بانسری بجاتی ھے اور مصیبت کے سارے لَمحات میں چھوٹی سی چھوٹی تکلیف پر بِلبلاتی ھے اور ہر رَنج و غم سے جان بچانے کے لیۓ اپنے خالق کے سامنے روتی اور گڑ گڑاتی ھے اور پھر جب اُس کے سر پر آٸ ھوٸ مصیبت ٹل ٹلا جاتی تو یہ دوبارہ اپنی اسی سرکشی پر اُتر آتی ھے جو اُس کے مَن میں آتی ھے اور اللہ تعالٰی جو انسان کو اِس سرکشی اور سزاۓ سرکشی سے بچانا چاہتا ھے وہ بار بار اِس کو اِس کے اُن مُشکل حالات کے مُشکل لَمحات یاد دِلاتا ھے جن مُشکل حالات میں اِس کو اپنا مُشکل کشا خالق و مالک یاد آتا ھے ، چونکہ یہ بات انسان کی فطرت میں موجود ھے اور اِس کو اپنی فطرت میں موجود ھونے اور فطرت میں موجود رہنے والی یہ بات مُشکل حالات میں اکثر یاد بھی آتی رہتی ھے اِس لیۓ اللہ تعالٰی بھی انسان کے اِن حالات و واقعات بار بار اس کے حافظے میں لاتا ھے اور بار بار انسانی فہم کی تفہیم کے لیۓ نٸی سے نٸ بات اور نٸ سے نٸ دلیل بھی اِس کے سامنے لاتا ھے تاکہ انسان اگر ایک بار اللہ کی بات پر کان نہ دَھرے تو دُوسری بار اُس کی بات سُن لے اور دُوسری بار بھی سُن کر بُھول جاۓ تو تیسری بار اُس کو یاد رکھے اور اگر بار بار بھی اللہ کی بات سُننے کے بعد بار بار اللہ کی ہر بات بُھول جاۓ تو کم اَز کم اتنی بات تو اُس کو بہر حال یاد رہنی چاہیۓ کہ اُس کے گردا گرد پھیلے ھوۓ ہمہ گیر جہان میں ہمہ وقت ہی ایک ایسی ہمہ گیر آواز گونجتی رہتی ھے جو اُس کو فریب و سراب سے بچانے اور حقیقت کی طرف آنے کی دعوت دیتی ھے ، اِس لیۓ اللہ نے ہر زمانے کی ہر زمین پر اہلِ زمین کی ہر چھوٹی بڑی قوم کے پاس اپنی آواز پُہنچانے کے لیۓ بار بار اپنے نبی اور اپنے رسول بہیجے ہیں اور اِس غرض سے بہیجے ہیں تاکہ انسان بار بار اللہ کی آواز سُنتا رھے ، قُرآن جو اہلِ زمین کے لیۓ اللہ کی آخری آواز ھے اِس کی اِن اٰیات میں بھی اللہ نے اپنی اِسی آوازِ اَزل کا اعادہ و تکرار کر کے انسان کو بتایا ھے کہ میں نے تُمہاری فطرت کو فطرتِ خیر بنایا ھے ، یہی وجہ ھے کہ جب بَحرِ آب کی بے کراں آبی تاریکی اور صحراۓ بے کراں کی بے کراں صحراٸ تاریکی میں تمہیں اپنا ہر جعلی اِلٰہ اور اپنا ہر خیالی خُدا بُھول جاتا ھے ، یاد آتا ھے تو وہی ایک خُدا ، وہی ایک اِلٰہ ، وہی ایک حاجت روا ، وہی ایک مُشکل کشا اور وہی ایک خالقِ ارض و سما یاد آتا ھے جو تُمہارا فاطر ھے اور تُمہاری فطرت میں نقشِ فطرت کی طرح نقشِ فطرت بَن کر موجود ھے اور تُمہاری جو فطرتِ ذات تُمہاری ذات کو سزا سے بچاتی ھے یہ بھی اُسی فاطر کی ذات ھے جو اپنے نقشِ فطرت کو اپنے عتاب سے بچاتی ھے اور اِس اَمر کی دلیل یہ ھے کہ وہ جب چاہے تُم پر آسمان سے کوٸ قہرِ بے مہر گرادے ، جب چاھے زمین سے آگ کا کوٸ لاوا نکال کر تُم کو اُس سے جلا دے اور جب چاھے تُم پر تُمہارے اپنے قاتل لَشکر مُسلط کر کے تُم کو صفحہِ ہستی سے مٹا دے لیکن وہ ایسا نہیں کرتا ، اِس لیۓ نہیں کرتا کہ وہ تُم سے محبت کرتا ھے اور چاہتا ھے کہ تُم بھی اُس کے اَحکام کی تابع داری کر کے اُس کی ذات کے ساتھ اپنی محبت اور اپنی وفا داری کا ثبوت دو !!

About Babar

Babar
I am Babar Alyas and I’m passionate about urdu news and articles with over 4 years in the industry starting as a writer working my way up into senior positions. I am the driving force behind The Qalamdan with a vision to broaden my city’s readership throughout 2019. I am an editor and reporter of this website. Address: Chak 111/7R , Kamalia Road, Chichawatni, Distt. Sahiwal, Punjab, Pakistan Ph: +923016913244 Email: babarcci@gmail.com https://web.facebook.com/qalamdan.net https://www.twitter.com/qalamdanurdu

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے