Home / پاکستان / دینی مدارس کے امتحانات،

دینی مدارس کے امتحانات،

دینی مدارس کے امتحانات، ایک بہترین فیصلہ
تحریر/ امداداللہ طیب

نائن الیون کے بعد کی بدلتی صورتحال سے ابھی جان نہیں چھوٹی تھی کہ کرونا نے دنیا کا منظر نامہ تبدیل کر کے رکھ دیا۔پوری دنیا ہل کر رہ گئی۔ملک جیل کا منظر پیش کرنے لگے۔ زمینی،فضائی رابطے منقطع ہو کر رہ گئے،سیاحتی انڈسٹری اپنی آخری سانسیں لینے لگی۔ائرپورٹس پر الو بولنے لگے۔تمام تعلیمی ادارے بند کر دیے گئے۔اربوں کھربوں کے ہندسے کو چھوتی ملکوں کی معیشت ڈولنے لگی۔لوگ گھروں میں محصور ہو کر رہ گئے۔
زمین پر خدا بنے بیٹھے حکمرانوں نے بھی آسمانی خدا کے آگے ہاتھ اٹھا لیے۔ خدائی تدبیر کے آگے سائنسی ٹیکنالوجی نے بھی جواب دے دیا۔بیت اللہ،حرم نبوی کئ دنوں تک زائرین حرم کو تڑپتے رہے۔ لوگ ایک دوسرے سے اجنبی ہو کر رہ گئے۔ وحشت کا ایسا ماحول بنا کہ ایک ہی گھر کے افراد آپس میں ملنے سے تو درکنار انہوں نے اپنے عزیزوں کے جنازوں میں جانا چھوڑ دیا۔ لاہور کا پروفیسر ظہیر ہو یا آزاد کشمیر کا رہنے والا وہ نوجوان جو اپنے باپ کی میت پر دھاڑیں مار مار کر روتا رہا، لیکن اس قسمت کے مارے جو ان کو باپ کی میت کو آخری کندھا خود ہی دینا پڑا۔ وحشت کے اس ماحول نے ہم سے اپنے پیاروں کا آخری مسنون عمل بھی چھین لیا اور وہ قسمت کا مارا جوان اپنے مقدر پر ہاتھ ملتا رہا۔
خوف و وحشت کے اس ماحول میں جب ایک ایک خبر پر دل دہل کے رہ جاتے تھے منجدھار میں پھنسی اس کشتی کو اہل حق علماء نے سہارا دیا۔اور عوام الناس کو رجوع اللہ کی طرف بلایا۔پوری دنیا کی مخالفت اور پراپیگنڈے کے باوجود مساجد کھلی رکھنے کا فیصلہ کیا۔کی روٹھے رب کو منانے کا یہی وقت ہے۔ پوری احتیاطی تدابیر کے ساتھ مساجد کی رونقیں علماء کے دم قدم سے بحال رہیں۔اور پانچوں وقت مساجد سے اللہ اکبر اللہ اکبر کی صدا آتی رہی۔طوفان تھما، غبار چھٹا تو علمائے حق کے بارے یہ بیان سننے کو ملا کہ مساجد و مدارس سے کرونا کا ایک کیس بھی نہیں ملا۔مساجد کو کھلا رکھنا اہل حق علماء کا یہ ایک ایسا کارنامہ ہے،کہ اس فقہی فیصلے کی نظیر پوری دنیا میں کہیں نہیں ملتی۔
امید ابھی چھٹی نہ تھی، مطلع ابھی ابرآلود تھا۔ کہ وہ وحشت کے اس ماحول میں ایک اور جراتمندانہ فیصلے نے لبرلز کی سوچوں کے سمندر میں بھونچال کھڑا کردیا۔ یہ کیسے ہو سکتا ہے؟ آپ لوگ انسانیت کے خیر خواہ نہیں ہیں؟ حالات حاضرہ کے تقاضوں کو آپ جانتے نہیں ہیں؟

وہ فیصلہ کیا تھا کے دینی مدارس کے سب سے بڑے تعلیمی بورڈ وفاق المدارس العربیہ پاکستان نے اکابر علماء کی مشاورت سے امتحان لینے کا فیصلہ کرلیا کہ امتحان ہو گا اور پورے ایس او پیز کے تحت ہوگا۔اس دوران افواہوں کا بازار بھی گرم رہا۔وفاق المدارس العربیہ پاکستان کا یہ فیصلہ کس قدر اہمیت کا حامل ہے مرشد و مربی پیر طریقت رہبر شریعت حضرت مولانا اسعد محمود مکی حفیظ اللہ تعالی فرماتے ہیں کہ
وفاق المدارس کے امتحانات طلبہ کی ترقی اور مستند تعلیم یافتہ ہونے کی قانونی اور اخلاقی ضرورت ھے
ملک بھر کے طلبہ ذوق و شوق سے امتحانات کی تیاری کریں
خوش قسمت ہو تم تمہارا سفر مثل خروج للجہاد تمہار مطالعہ مثل پہرہ فی الجہاد تمہارا خرچ راہ علم میں مثل انفاق للجہاد ھے
امتحانات کے مصارف اور مشقت سے قرب خداوندی حاصل کرو اور علم نافع کی دعائیں ہمیشہ کرتے رھو.
وفاق المدارس العربیہ پاکستان کی قیادت اور پاکستان کے جید علماء ان جراتمندانہ فیصلوں پر مبارکباد کے مستحق ہیں کہ انہوں نے وحشتوں کے اس ماحول میں بھی علم کی شمع کو بجھنے نہ دیا اور اپنے اس فیصلے سے علم دوست ہونے کا ثبوت دیا
ملک بھر میں اجلاس کیے، رائے عامہ کو ہموار کیا۔پورے ملک کی طرح ڈویژن گوجرانوالہ،سیالکوٹ، نارووال میں بھی وفاق المدارس کے مسؤل حضرت مولانا محمد طیب صاحب اور ان کے رفقاء نے اپنی انتھک محنت کے ساتھ وفاق کے پیغام کو پہنچانے میں کوئی کسر نہ چھوڑی۔
جامعہ ختم نبوت نارووال اور جامعہ مدنیہ ڈسکہ کے حالیہ اجلاس اس بات کے گواہ ہیں۔تادم تحریر آج 11 جولائی بروز ہفتہ وفاق المدارس العربیہ پاکستان کا پہلا پیپر ہے پورے ملک میں ایک ہی وقت پرتمام کلاسز کا پیپر شروع ہوگا اور ایک ہی وقت پر پیپر ختم ہوگا نظم و ضبط کی یہ ایک ایسی مثال ہے جس کی نظیر ڈھونڈنا دنیا میں بہت مشکل ہے۔اور بلاشبہ وفاق المدارس کی کامیابی کی بہت بڑی دلیل ہے۔ اللہ رب العزت اتحاد و یکجہتی کی اس فضاء کو قائم اور دائم رکھے۔ اور ملک پاکستان کو اسلام کا گہوارہ بنائے۔ ہر قسم کی سازشوں سے ہمارے وطن عزیز کی حفاظت فرمائے۔ آمین

About Babar

Babar
I am Babar Alyas and I’m passionate about urdu news and articles with over 4 years in the industry starting as a writer working my way up into senior positions. I am the driving force behind The Qalamdan with a vision to broaden my city’s readership throughout 2019. I am an editor and reporter of this website. Address: Chak 111/7R , Kamalia Road, Chichawatni, Distt. Sahiwal, Punjab, Pakistan Ph: +923016913244 Email: babarcci@gmail.com https://web.facebook.com/qalamdan.net https://www.twitter.com/qalamdanurdu

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے