Home / کالم / مسلمان کے ایمان کی حالت،

مسلمان کے ایمان کی حالت،

📜 * آج کے مسلمان کا اسلام پر ایمان اتنا کمزور کیوں ہے؟*
✒ *سید خالد جامعی مدظلہ*
ــــــــ ـــــــــ ــــــــ

سعودی علماء کہہ رہے ہیں ہاتھ نہ ملاؤ، مصافحہ ترک کردو اس سے کورونا پھیل رہا ہے، کورونا پھیلانے والا چین کا صدر مصافحہ کر رہا ہے، *ہم سے اچھا کافر ہے جس نے اپنی روایت ترک نہیں کی، ہم نے مسلمان ہو کر مصافحہ کی سنت کو ترک کر دیا، کس کا ایمان بہتر ہے؟* مسلمان عارف علوی نے چینی سفیر سے اور فلاحی ریاست مدینہ کے خلیفہ عمران نے مولوی طارق جمیل سے ہاتھ ملانے سے انکار کر دیا، ان کا ایمان تھا کہ ہاتھ ملانے سے سفیر اور مولوی کا کورونا وائرس ان دونوں کو لگ جائے گا، *یہ مسلمان کے ایمان کی حالت ہے کہ مصافحہ کی سنت بھول گئے* دوسری طرف چین کے کافر صدر نے پاکستانی مسلمان صدر عارف علوی سے جبرا ہاتھ ملایا، اخبار میں تصویر آ گئی، عارف علوی کی جرات نہیں ہوئی کہ آقا سے ہاتھ نہ ملاتے چینی سفیر کی طرح اس کو دھتکار دیتے، *چینی کافر کو اپنے کفر، اپنی سائنس، اپنی دوا پر اتنا یقین ہے کہ اس کی وجہ سے عارف علوی کا کورونا وائرس اس پر اثر انداز نہیں ہوگا، عارف علوی کا اسلام پر ایمان اتنا کمزور کیوں ہے؟ سائنس پر چینیوں کا ایسا عقیدہ اور مسلمانوں کا اسلام پر اتنا کمزور عقیدہ؟*
*ـــــــــــــــــــــــــــ*
روزنامہ جنگ کراچی نے ۱۷ مارچ ۲۰۲۰ کو دو تصویریں شائع کیں، صدر عارف علوی ائرپورٹ سے چین جا رہے ہیں، چینی سفیر ہاتھ ملانے آگے بڑھا صدر اسے دھتکارتے ہوئے بغیر ہاتھ ملائے جا رہے ہیں، وہ سفیر ہے یہ صدر ہیں، وہ کیا کرتا! دوسری تصویر میں طارق جمیل صاحب عمران خان سے مصافحہ کےلئے آگے بڑھنا چاہ رہے ہیں، عمران خان نے سینے پر ہاتھ رکھ کہہ دیا، حضرت! دور ہو جائے آپ سے کورونا ہوسکتا ہے، *آپ نیک ہیں مگر آپ جیسے نیک لوگوں سے بھی متعدی مرض پھیل سکتا ہے، نیکی کا کوئی فائدہ نہیں (نعوذ باللہ)* یہ پاکستان کی ریاست مدینہ کے صدر اور وزیر اعظم کا ایمان، خوف اور موت سے گھبراہٹ کا علم ہے، جبکہ اسلامی عقیدہ یہ ہے کہ *موت کسی سبب، عذر، علت اور بیماری سے نہیں آتی، موت صرف اللہ کے حکم سے آتی ہے، اس کا وقت، مقام اور جگہ طے شدہ ہوتے ہیں، یہ نہ آگے ہو سکتی ہے نہ پیچھے، اس کا وقت پہلے سے طے شدہ ہے* مگر ریاست مدینہ کے دونوں بڑے (صدر، وزیر اعظم) اسلامی عقیدہ سے ناواقف اور اس پر یقین رکھنے سے معذور ہیں، *اقتدار قومی ریاست میں عہدیداروں کو اسی طرح بے شرم بناتا اور ایمان سے محروم کرتا ہے، ایمان بندہ مومن کےلئے اس فانی دنیا میں واحد سہارا اور اثاثہ ہے* دوسری جانب روزنامہ جنگ ۱۸ مارچ میں چینی صدر شی پین اور پاکستانی صدر عارف علوی کی تصویر ہے، چینی صدر عارف علوی سے گرم جوشی سے ہاتھ ملا رہے ہیں، ان کا ہاتھ پکڑ کر اپنے ہاتھ میں رکھا ہوا ہے، ان کے چہرے پر کوئی خوف نہیں ہے، *انسانی ضمیر پوچھ رہا ہے کہ عارف علوی نے چینی سفیر سے ہاتھ نہ ملایا اسے دھتکار دیا تو اپنے آقا چینی صدر سے کیوں ہاتھ ملایا؟ اسے بھی دھتکار دیتے مگر آقا اربوں ڈالر قرضے دے رہا ہے لہذا آقا سے ہاتھ ملاتے ہوئے کورونا کا خطرہ نہیں* جس طرح ہر سعودی سرکاری مولوی کرنسی لے رہا ہے، دے رہا ہے اسے کوئی خطرہ نہیں، *دنیا کا ہر مسلمان کرنسی لے رہا ہے، مسلمان کو اس سے کوئی خطرہ محسوس نہیں ہو رہا مگر مسجد جانے میں ہر ایک کو بلکہ سعودی مولوی کو بھی خوف محسوس ہو رہا ہے* میڈیا نے پوری دنیا پر جھوٹا خوف مسلط کر دیا ہے، کورونا موت کا پروانہ نہیں اور اگر ہے تب بھی موت بیماری سے نہیں، اللہ کے حکم سے آتی ہے، *موت کا اتنا خوف ہے مگر لوگ خوف زدہ نہیں، صرف سعودی مولوی خوف زدہ ہیں* دہلی کے شاہین باغ میں عورتیں تین ماہ سے انسانی حقوق کےلئے دھرنا دے رہے ہیں انہوں نے دھرنا ختم کرنے سے انکار کر دیا ہے، کراچی حکومت نے چھٹی دی تو لاکھوں لوگ سی ویو ساحل پر پہنچ گئے، وزیر اعلی غصے سے پاگل ہوگئے، فرمایا عوام تنہائی اختیار کریں، اسکول بند کئے تو ساحل سمندر بھر گیا لوگ تنہا نہیں رہیں گے تو ریسٹوران، ہوٹل اور چائے خانے بند کر دوں گا (جنگ ۱۷ مارچ ۲۰۲۰) لوگ ساحل، ہوٹل مولوی کے فتوے کے بغیر بے دھڑک جا رہے ہیں اور سعودی مولوی لوگوں کو موت سے خوف زدہ کر رہے ہیں، *جب عوام تفریحات کےلئے جا سکتے ہیں تو ان کو مسجد آنے سے روکنے کے فتوے دینا بے شرمی کی انتہا ہے* کیا علماء میں غیرت دینی، حمیت اور اسلام سے محبت اس قدر ناپید ہے، *ایسے جری عوام کو مسجد بلانے کی بجائے ان کو لہو لعب میں مبتلا چھوڑ دیا ہے، موت کی کوئی تیاری ہی نہیں؟*
ـــــــــــ
*تفہیم مغرب فورم* سے مستفید ہونے کےلئے درج ذیل لنک پر کلک کیجئے!
https://chat.whatsapp.com/K9K0fNFHevH64vKbmNdK0p

https://chat.whatsapp.com/Dxr4XY4Cco5AxVULPVYr0T

About Babar

Babar
I am Babar Alyas and I’m passionate about urdu news and articles with over 4 years in the industry starting as a writer working my way up into senior positions. I am the driving force behind The Qalamdan with a vision to broaden my city’s readership throughout 2019. I am an editor and reporter of this website. Address: Chak 111/7R , Kamalia Road, Chichawatni, Distt. Sahiwal, Punjab, Pakistan Ph: +923016913244 Email: babarcci@gmail.com https://web.facebook.com/qalamdan.net https://www.twitter.com/qalamdanurdu

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے