Home / کالم / تخلیقی_کہانی

تخلیقی_کہانی

تحریر
اسحاق_مزاری

ایک دفعہ کا زکر ہے کہ ایک ملک میں ایک بہت سخت اور ظالم بادشاہ کی حکومت تھی جو بھی اسکے خلاف کچھ بولتا یا لکھتا اسے پھانسی گھاٹ میں اتار دیا جاتا تھا.
اس ملک میں ایک روشن خیال شخص رہتا تھا جو بادشاہ کی سختیوں اور ظلم سے تنگ آکر بولتا اور لکھتا تھا.
وہ روشن خیال عوام کو غلامی کی چکی سے آزادی دلانے کے لیے بیدار کرنے کی کوشش کرتا رہتا.
وہ واحد صاحب علم تھا جو اپنے علم کی روشنی سے لوگوں کو بیدار کرنے کی کوشش کرتا رہتا تھا.
کچھ ماہ بعد بادشاہ تک خبر پہنچی تو اس نے حکم دیا کہ اس روشن خیال شخص کو پھانسی پر لٹکایا جائے.
کہیں لوگ بادشاہ خلاف نہ ہوجائیں.
اس روشن خیال کو ہزاروں کند ذہنوں کے سامنے ہاتھ باندھ کر پیش کردیا گیا جسکا قصور اتنا تھا کہ وہ شخص ان کند ذہنوں کو بیدار کرنے کی کوشش کررہا تھا.
اور اس روشن خیال کو ان کند ذہن لوگوں کیسامنے پھانسی کے گھاٹ اتار دیا گیا اور کند ذہن بادشاہ کے اس عمل پر تالیاں بجاتے ہوئے واپس چلے گئے.
بلکل اسی طرح ہمارے ملک خدادا میں اگر کوئی روشن خیال علاقائی مسائل کو اجاگر کرنے کی کوشش کرتا ہے تو علاقائی نمائندے ان روش خیال ذہنوں کو کچلنے کی کوشش کرتے ہیں کہ کہیں لوگ ہماری مخالفت نہ کریں تو وہ کند ذہن لوگ جنکے حق اور آزادی کے لیے آواز اٹھا جارہا ہو وہ لوگ اس عمل پر تالیاں بجاتے اور تماشہ دیکھتے ہیں.

#نوٹ
یہ تحریر تخلیقی ہے لیکن آجکل حقیقت میں بھی یہی کچھ ہورہا ہے.

About Babar

Babar
I am Babar Alyas and I’m passionate about urdu news and articles with over 4 years in the industry starting as a writer working my way up into senior positions. I am the driving force behind The Qalamdan with a vision to broaden my city’s readership throughout 2019. I am an editor and reporter of this website. Address: Chak 111/7R , Kamalia Road, Chichawatni, Distt. Sahiwal, Punjab, Pakistan Ph: +923016913244 Email: babarcci@gmail.com https://web.facebook.com/qalamdan.net https://www.twitter.com/qalamdanurdu

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے