Home / کالم / کیا اہل کتاب ہیں ؟

کیا اہل کتاب ہیں ؟

ترتیب ؤ انتخاب
عرفان
قصور
*🔥🔥🔥🔥🔥🔥🔥🔥🔥🔥🔥*
*🌐کیا روافض مثل اہل کتاب ہیں ؟!*

*🔮روافض و شیعہ کی مثال ان اہل کتاب کی سی ہے جن کے بارے میں قرآن نے فرمایا کہ یہ تم سے اس وقت تک راضی نہیں ہوسکتے جب تک کہ تم ان کے دین کی پیروی نہیں کرو گے ۔*

*🔮اہلسنت چاہیں روافض سے اعتدال و میانہ روی کے ضمن میں اپنے نظریات میں کتنی ہی مداہنت کیوں نہ دِکھالیں، آپ چاہیں سیدنا علیؓ کو مولا علی علیہ السلام کہتے رہیں، ان کو مولائے کائنات، سرور کونین، آقائے دو جہاں بنالیں، سیدنا عثمانؓ کو اقربا پرور مان لیں، سیدنا معاویہؓ وسیدہ عائشہؓ کو سیدنا علیؓ کے مد مقابل آنے پر غلطی کا مرتکب قرار دے لیں، سیدنا معاویہؓ کو خلیفہ کے بجائے بادشاہ قرار دیتے رہیں، ان سے بدعات کا ارتکاب کرواتے رہیں،یزید و مروانؓ کی قبر میں کیڑے بھرتے رہیں، جمیع بنو امیہ خلفاء کو بدترین بادشاہ باور کرواتے رہیں، خلافت کا خاتمہ تیس سال میں کروادیں، عمرو بن العاصؓ کو چالباز اور مغیرہ بن شعبہؓ کو فتنہ پرور قرار دے لیں، سیدنا علیؓ کو مرجوح و شاذ موقف کے تحت سیدنا عثمانؓ سے زیادہ فضیلت دلوادیجئے، محرم الحرام میں شیعوں کی طرح سیدنا حسینؓ کے غم میں مجالسیں منعقد کروالیجئے، اہل تشیع کے ساتھ ٹی وی پروگرامز میں نوحے پڑھ لیجئے، سیدنا حسن و حسینؓ کو امام و علیہ السلام کے سابقوں لاحقوں کے ساتھ پکارتے رہیئے، محمد بن قاسم و محمود غزنوی سب کو لٹیرا مان لیجیے۔*

*🔮غرض آپ کچھ بھی* *کرلیجیے، کسی بھی حد تک چلے جائیں، یہ روافض و اہل تشیع آپ سے اس وقت تک راضی نہیں ہونگے جب تک آپ کے ماتھے پر اہلسنت کا ٹیکہ چسپاں ہے۔ جب تک آپ کے دل میں ابو بکرؓ و عمرؓ کا تقدس برقرار ہے۔ یہ وقت آنے پر آپ کی پیٹھ میں خنجر گھونپ کر رہیں گے، ان کے لیے آپ ناصبی ہیں، آپ مباح الدم ہیں۔*

*🔮یہ آپ پر فتنہ پروری و فرقہ پرستی کا الزام دھرتے رہیں گے جب تک کہ آپ سُنیّت چھوڑ کر شیعیت اختیار نہیں کرلیتے۔ جب تک کہ آپ ان کی طرح خلفائے ثلاثہ و جمیع صحابہؓ سے نفرت کا اظہار نہیں کرلیتے۔ ان کا دین توّلا سے زیادہ تبّرا پر مبنی ہے۔ آپ لاکھ حُبِ اہلبیت کی بانسری بجاتے رہیں جب تک آپ بغض ِصحابہ کا نقارہ نہیں پیٹیں گے، یہ آپ کو دل سے نہیں تسلیم کریں گے۔ آپ ان سے لاکھ روادری دکھاتے رہیئے، لاکھ وسیع النظری کا مظاہرہ کرتے رہیں، ان کی ۲۱ رمضان اور ۱۰ محرم کی منعقد کردہ مجالس میں جا جا کر سیدنا علیؓ و سیدنا حسینؓ کے فضائل پڑھتے رہیے، یہ آپ کے لیے اتنا توسع نہیں رکھ سکتے ہیں کہ یکم محرم کو اہلسنت کی کسی مجلس میں آکر شانِ عمرؓ بیان کرجائیں۔ بیان کرنا تو دور کی بات، یہ ایسی مجالس و محفل میں آکر بیٹھنے کے روادار تک نہیں ہیں۔*

*🔮یہ اعتدال، یہ وسعت* *النظری، یہ توسع کا کیڑا صرف اہلسنت کو کاٹتا ہے اور اسی کیڑے کے زہر سے ۱۴۰۰ سال سے مسلسل یہ ان روافض کے ہاتھوں زک اٹھاتے آئے ہیں۔ حد تو یہ ہے کہ اہلسنت میں سے بعض حضرات کی فطرت اس قدر مسخ و “غیر طاہر” ہوچکی ہے کہ یہ ابو بکرؓ و عمرؓ کو گالی دینے والے اور مرتد سمجھنے والوں کی محافل میں بیٹھنے کے لیے تو ہمہ وقت تیار رہتے ہیں، امجد عباس جیسے معتصب رافضی کے ساتھ پینگیں بڑھانے کو تو مستعد رہتے ہیں لیکن اہلسنت کے اس طبقہ کے ساتھ چلنے کے روادار نہیں جو تعدیلِ یزید و بنو امیہ کا نظریہ رکھتا ہو۔ ان کے لیے وہ اہلسنت قطعی قابل قبول نہیں جو مشاجرات کے سلسلے سیدنا علیؓ و حسینؓ کا پورا احترام کرتے ہوئے ان حضرات کے نظرئیے سے متفق نہیں، لیکن وہ روافض و اہل تشیع ان کو قبول ہیں جو ابو بکر ؓ و عمر‍ؓ و عثمانؓ کو غاصب اور عائشہؓ و حفصہؓ کو مسلمان ہی نہیں مانتے۔ حیرت ہے در حیرت ہے۔’*

*🔮روافض نے وہ کھیل کھیلا ہے کہ آج یہ ان کے مقابلے میں ایک دوسرے کے دشمن بنے بیٹھے ہیں اور خود روافض ان کے سب سے بڑے گھات لگائے دشمن و نقب زن ہیں۔*

About Babar

Babar
I am Babar Alyas and I’m passionate about urdu news and articles with over 4 years in the industry starting as a writer working my way up into senior positions. I am the driving force behind The Qalamdan with a vision to broaden my city’s readership throughout 2019. I am an editor and reporter of this website. Address: Chak 111/7R , Kamalia Road, Chichawatni, Distt. Sahiwal, Punjab, Pakistan Ph: +923016913244 Email: babarcci@gmail.com https://web.facebook.com/qalamdan.net https://www.twitter.com/qalamdanurdu

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے