Home / کالم / گزارش ہے

گزارش ہے

انتخاب
بابرالیاس
بہت اعلی تحریر آپکی نظر

📖 *جناب قبلہ آیاز صاحب کی خدمت میں*
✒ *سید خالد جامعی مدظلہ*
ــــــــ ــــــــ ــــــــ

قبلہ آیاز صاحب سے بنیادی سوال یہ ہے کہ *فتوی سائنسی اور ریاستی منہاج علمی میں دیا جائے گا یا اسلامی علمیت کے منہاج میں؟ سائنسی، ریاستی علمیت متغیر ہے، مطلق Absolute نہیں، اسلامی علمیت حتمی، قطعی Absolute ہے تو کیا قطعی علمیت کو غیر قطعی علمیت پر قربان کیا جا سکتا ہے؟* سائنسی علمیت اپنے توہمات پر چلتی ہے، اسلامی علمیت بدیہات پر چلتی ہے تو کیا اسلامی علمیت کو مستر کر کے سائنسی علمیت اختیار کر لی جائے؟ *ریاست جو سائنس و سرمایہ کی تنظیم کا نام ہے، وہ بھی سائنسی علمیت کو مکمل طور قبول نہیں کرتی، وہ صرف سائنس کے اس فیصلے کو مانتی ہے جو اس کے مفادات کے تابع ہو* مثلا ہسپتال کھلے رہیں گے، مسجد نہیں جبکہ ہسپتال میں کورونا سے بیماری کا سو فیصد یقین ہے *ہسپتال میں ڈاکٹر، نرس اور بھنگی کا ایمان ہم جیسے دین داروں سے اچھا ہے جو موت کے یقینی خطرے کے باوجود اپنا کام کر رہا ہے، ایک مذہبی آدمی پوپ کی طرح خوف زدہ ہو کر گھر میں بیٹھا ہوا ہے اور جو لوگ نماز پڑھنے مسجد آ رہے ہیں انہیں جبرا فتوے کی قوت سے روک رہا ہے، لوگ با جماعت نماز اپنی مرضی سے پڑھنے آتے ہیں ریاستی جبر سے نہیں* لہذا انہیں ان کے حال پر چھوڑ دیا جائے، ریاست مداخلت نہ کرے *میڈیا ہاؤس کھلے ہوئے ہیں، بینک کھلا ہے، کرنسی نوٹ سے کورونا زیادہ پھیلتا ہے، جیلیں بھری ہوئی ہیں، بہت سے کار خانے کام کر رہے ہیں، ہر جگہ اجتماع ہے، اختلاط ہے، سڑکوں پر ریاستی کارندوں کا اجتماع ہے، ظاہر ہے انسانی زندگی اختلاط کے بغیر ممکن نہیں، مسجد میں تو نمازی دس پندرہ منٹ کےلئے آتے ہیں ان سے کورونا کا خطرہ ہے، میڈیا ہاؤس، بینک، نیوز روم، فیکٹری میں بارہ گھنٹے چوبیس گھنٹے کام ہو رہا ہے اس سے کورونا کا خطرہ نہیں* جدید ریاست سائنس دانوں کے فیصلے کیسے رد کرتی ہے؟ اس کےلئے ہارورڈ کے پروفیسر کی کتاب The Collaps Of Westren Civilization پڑھ لیجئے! امریکہ میں سرمایہ، مارکیٹ اور ریاست کےلئے خطرہ بننے والے تین سو سائنس دانوں کو گرفتار کر لیا گیا، سپریم کورٹ نے ان کی ضمانت مسترد کر دی، کیا سعودی علماء اور قبلہ آیاز سائنس دانوں سے یہ سلوک کر سکتے ہیں؟ وہ تو یہ کہہ رہے ہیں سمعنا و اطعنا سائنس اور ریاست کی ایسی پرستش! قبلہ آیاز صاحب اور ان جیسے متجدد علماء فتوے دینے سے پہلے مغربی سائنس، ماڈرن ریاست اور ماڈرن میڈیسن پر چند کتابیں پڑھ لیں! کورونا کا کوئی علاج ابھی تک دریافت نہیں ہوا لہذا مسئلے کا آسان حل یہ ہے کہ *لوگ گھروں میں نفلی اعتکاف کریں، نوافل کا اہتمام کریں، ہر وقت با وضو رہیں اور ایسی غذائیں استعمال کریں جو فطری اور قدرتی ہوں جو آپ کی قوت مدافعت میں اضافہ کریں اس کی تفصیل اپنے آس پاس کے بزرگوں اور حکیموں سے معلوم کی جا سکتی ہیں*
ــــــــــــــ

About Babar

Babar
I am Babar Alyas and I’m passionate about urdu news and articles with over 4 years in the industry starting as a writer working my way up into senior positions. I am the driving force behind The Qalamdan with a vision to broaden my city’s readership throughout 2019. I am an editor and reporter of this website. Address: Chak 111/7R , Kamalia Road, Chichawatni, Distt. Sahiwal, Punjab, Pakistan Ph: +923016913244 Email: babarcci@gmail.com https://web.facebook.com/qalamdan.net https://www.twitter.com/qalamdanurdu

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے