Home / کالم / خوف

خوف

ازقلم⁦🖋️⁩
حافظ بلال بشیر
🌺🌺🌺🌺🌺🌺🌺
کرونا وائرس کی بیماری سے زیادہ خوف
جب سے کرونا پاکستان میں داخل ہوا ۔ میں کراچی میں موجود تھا 16 مارچ کو بذریعہ ٹرین آبائی گاؤں روانہ ہونے کے لیے کینٹ اسٹیشن کی طرف روانہ ہوا تو عام عوام تو مجھے روڈز پر چلتی پھرتی، ہنستی مسکراتی نظر آئی۔ لیکن پیسے والے لوگ یعنی اپنی ذاتی گاڑیوں پر سفر کرنے والے لوگ مجھے کم نظر آئے۔ جب کینٹ اسٹیشن پہنچا تو 16 مارچ کو شام کے وقت روانہ ہونے والی سب ٹرینیں لیٹ تھیں۔ جس کی وجہ سے تمام پلیٹ فارم پر عوام کی کثیر تعداد موجود تھی بد قسمتی سے جس ٹرین میں میں نے سفر کرنا تھا وہ بھی 3:30 کی بجائے شام 7 بجے روانہ ہوئی، پلیٹ فارم پر موجود عوام الناس کی کثیر تعداد بغیر کسی ڈر خوف کے اپنی فیملیز کے ساتھ موجودہ وزارت ٹرین کو کوس کوس کر مزے لے رہے تھے اور بیسوں لوگوں سے میں نے کرونا کے بارے میں سوالات کیے۔ سب کے جوابات تو یہاں ذکر کرنا ممکن نہیں ہے لیکن سب کے جوابات کا مفہوم یہ ہی تھا کہ یہ ڈرامہ ہے اور بیرونی امداد کے چکر میں یہ سب کچھ کیا جا رہا ہے بلکہ ایک دوست نے یہ بھی کہا کہ جس طرح آن لائن وائرس ڈیجیٹل مارکیٹ میں چھوڑے جاتے ہیں۔ پھر اس کے اینٹی وائرس بیچے جاتے ہیں اور لاکھوں ڈالروں کا کاروبار ہوتا ہے اسی طرح یہ بھی ایک کاروباری وائرس چھوڑ کر اس کی اینٹی وائرس ویکسین تیار کر کے لاکھوں ڈالرز کا کاروبار کیا جائے گا اور پوری دنیا میں عوام کو پاگل بنا کر لاکھوں ڈالرز بٹورے جائیں گے
چونکہ ٹرین لیٹ تھی اس لیے میرے کراچی کے دوست نبیل عرفان نے مجھے کہا کہ ابھی ٹرین آنے میں کافی ٹائم لگے گا ہم باہر شہر میں چلتے ہیں میں نے بھی یہ سوچ کر حامی بھر لی، کہ چلیےَ شہر کے دوسرے رخ کا بھی سروے ہو جائے گا۔ وہاں بھی یہ ہی ہوا کہ غریب عوام اور مزدور طبقہ بلا خوف خطر اپنا کام جاری رکھے ہوئے ہے جبکہ پاکستان کا زیادہ امیر طبقہ چھپ کر بیٹھ گیا ہے، جب واپس پلیٹ فارم پر پہنچے تو وہاں وہ ہی عوام الناس بلا خوف و خطر ٹرینوں کا انتظار کر رہے ہیں نہ کوئی ماسک، نہ کوئی ڈر، نہ کوئی ہاتھ ملانے میں ہچکچاہٹ۔ لوگ صحیح کہہ رہے تھے یا غلط ، اس کا فیصلہ تو وقت کرے گا۔
ہمیں ان حالات میں رجوع الی اللّٰہ کی ضرورت ہے ہم آپنے زندگی کے کام بھی جاری رکھیں، اور توبہ و استغفار بھی کرتے رہیں اپنے گناہوں سے معافی مانگیں۔ اور خوف و ہراس نہ پھیلائیں۔ دنیا میں کوئی ایسی بیماری نہیں جس کی شفاء اللّٰہ پاک نے نہ نازل کی ہو۔

About Babar

Babar
I am Babar Alyas and I’m passionate about urdu news and articles with over 4 years in the industry starting as a writer working my way up into senior positions. I am the driving force behind The Qalamdan with a vision to broaden my city’s readership throughout 2019. I am an editor and reporter of this website. Address: Chak 111/7R , Kamalia Road, Chichawatni, Distt. Sahiwal, Punjab, Pakistan Ph: +923016913244 Email: babarcci@gmail.com https://web.facebook.com/qalamdan.net https://www.twitter.com/qalamdanurdu

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے