Home / کالم / بچپن کا کھیل جوانی کا سبق*

بچپن کا کھیل جوانی کا سبق*

*تحریر
محمد اویس شاہد*
📙📙📙📙📙📙
کبھی کاغذ کو تین چار تہیں لگا کر اس میں نوکیلی چیز سے سوراخ کیا ہے؟ یقینا یہ عادت بچپن میں ہم سب کی رہی ہوگی. دیکھا ہے کہ جب کاغذ کو کھولا جاتا ہے تو اس میں فقط ایک ہی سوراخ نہیں ہوتا بلکہ کاغذ تہہ در تہہ ہونے کی بنا پر اس میں درجنوں سوراخ ہو چکے ہوتے ہیں. ہم نے تو ایک جگہ نوکیلی چیز پر وزن ڈالا تھا لیکن کاغذ مختلف جگہوں سے تار تار ہو جاتا ہے، بلکل یہی حالت ہمارے نفس کی بھی ہے. کوئی ایک چھوٹا سا گناہ جسے ہم معمولی سمجھ کر کر رہے ہوتے ہیں وہ غیر محسوس طور پر ہمارے باطنی نظام کو بگاڑ رہا ہوتا ہے، اسے پارہ پارہ کر رہا ہوتا ہے. ہماری روح کے ایک گناہ کی وجہ سے بہت سے اعضاء اپنے مقصد سے ہٹ کر تار تار ہو جاتے ہیں، ان سے ایمان کا نور نکل کر تحلیل ہوجاتا ہے اور آہستہ آہستہ صرف اندھیرے بچتے ہیں، ضلالت اور مایوسی کے اندھیرے، ایسے اندھیرے جن کے بعد اگر ہم اپنی روح کی پیوند کاری کرنا بھی چاہیں تو پہلے سی بات نہیں رہتی. ایمان کی حلاوت بھی پہلے سی نہیں رہتی، پھر صرف سر جھکتے ہیں دل نہیں اسی لئے بہت سی احادیث مبارکہ میں گناہوں کو ایک دوسرے پر محمول کیا ہے، مثلاً جھوٹ کو تمام برائیوں کی جڑ بتایا گیا ہے اور بدنظری کو زنا کی پہلی سیڑھی، اس آسان سے فلسفے کو سمجھنے سے احادیثِ مبارکہ کا وسیع مفہوم باآسانی سمجھ آجاتا ہے.

About Babar

Babar
I am Babar Alyas and I’m passionate about urdu news and articles with over 4 years in the industry starting as a writer working my way up into senior positions. I am the driving force behind The Qalamdan with a vision to broaden my city’s readership throughout 2019. I am an editor and reporter of this website. Address: Chak 111/7R , Kamalia Road, Chichawatni, Distt. Sahiwal, Punjab, Pakistan Ph: +923016913244 Email: babarcci@gmail.com https://web.facebook.com/qalamdan.net https://www.twitter.com/qalamdanurdu

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے