Home / کالم / وقت کی اہمیت اور وقت شناس لوگ“*

وقت کی اہمیت اور وقت شناس لوگ“*

*” انتظار کی گھڑیاں ختم“*

بہت سارے دوست احباب کا یہ شکوہ مسلسل رہا کہ آج کل آپ کے مضامین پڑھنے کو نہیں مل رہے آج پھر وقت ہوا چاہتا ہے کہ آپ کے سامنے پیش کیا جاۓ بہت ہی محنت ومشقت کے بعد ایک کتاب کے مطالعہ کا خلاصہ جو ”وقت کی اہمیت اور وقت شناس لوگ“ کے نام سے مختلف اخبارات و رساٸل میں لگا اور لگ رہا ہے جن میں لگ چکا وہ حاضر خدمت ہیں۔۔

پاکستان کے مشہور اور مقبول ترین رساٸل میں سے ایک نام ماہنامہ ”آب حیات کا ہے“ جس میں بندہ کا مضمون لگا پڑھیے اور راۓ سے ضرور آگاہ کیجۓ ۔۔۔ جزاك اللهُ‎

*”وقت کی اہمیت اور وقت شناس لوگ“*

ازقلم: *
حافظ عمیرحنفی*

وقت افراد اور قوموں کا سرمایہ ہے،ترقی کی سب راہیں اس سرمایہ کے ٹھیک استعمال ہی کی بدولت طے ہوسکتی ہیں، ہمیشہ وہ اقوام ترقی پاتی ہیں جو اس گراں مایہ پونجی کو صحیح استعمال کرتی ہیں، کسی قوم کے زوال کی پہلی علامت یہ ہے کہ اس کے افراد ضیاع وقت کی آفت کا شکار ہوجائیں، مسلمان قوم جو ایک درخشاں تاریخ رکھتی ہے جس کے جاہ وجلال اور عظمت وسطوت کے پرچم سرنگوں ہوئے کوئی زیادہ عرصہ نہیں ہوا،وقت کی قدر اس کی مذہبی فرائض میں داخل ہے، یہ مسلم قوم صدیوں دنیا پر چھائی رہی، ترقی کے زینے چڑھتی رہی، ان کی علم و دانش کی درسگاہیں تو وقت کی پابند تھیں ہی، وقت کے مسلم بادشاہوں کے درباروں سے بھی یہی پیغام ملا کرتا تھا کہ جو کام وقت کے ضیاع کا باعث ہو خواہ کتنا ہی حیرت انگیز اور بظاہر خوش نما کیوں نہ ہو ترک کردیا جائے۔

آج مغرب مادی ترقی کی جن شاہراہوں پر گامزن ہے،اس نے سائنس و ٹیکنالوجی میں ترقی کے جو مراحل طے کیے ہیں، فلسفہ وحکمت کی جن بلندیوں پر کمندیں ڈالی ہیں،اس کی بنیادی وجہ یہ ہے کہ مغربی معاشرہ ہزار خرابیوں کے باوجود وقت کا قدردان ہے۔افراد کی صلاحیتوں کو بروئے کار لانے کے لیے مواقع فراہم کرتا ہے، اس مغربی معاشرہ میں مجموعی طور پر کام چوری کی عادت نہیں ہے،ملازمت کے اوقات کی پابندی اور جم کرکام کرنا ان کے معاشرہ کا بہترین خاصہ ہے۔

غرض یہ کہ جو قومیں وقت کی قدر کرنا جانتی ہیں وہ صحراؤں کو گلشن میں تبدیل کرسکتی ہیں ،فضاؤں پر قبضہ کرسکتی ہیں، عناصر کو مسخر کرسکتی ہیں،پہاڑوں کے جگر پاش پاش کرسکتی ہیں،ستاروں پر کمندیں ڈال سکتی ہیں،زمانہ کی زمام ِ قیادت سنبھال سکتی ہیں، لیکن جو قومیں وقت کو ضائع کردیتی ہیں وقت ان کو ضائع کردیتا ہے،ایسی قومیں غلاموں کی زندگی بسرکرتی ہیں،اور وہ لوگ دین ودنیا دونوں کے اعتبار سے خسارے میں ہوتے ہیں۔

غفلت کے اس گرداب سے نکلنے اور اصل تعمیری مقصد میں حیات مستعار صرف کرنے کی طرف قرآن مجید نے توجہ مبذول فرمائی ہے۔
ترجمہ: ”اور اللہ وہ ذات ہے جس نے رات دن ایک دوسرے کے پیچھے آنے جانے والے بناۓ اس شخص (کے سمجھنے کےلیے) جو سمجھنا چاہے یا شکر کرنا چاہے“(الفرقان۔63)
امام بخاریؒ نے کتاب الرقاق اور امام ترمذی نے کتاب الزہد میں ایک حدیث نقل فرمائی ہے:جس کاترجمہ یہ ہے کہ : ”دو نعمتیں ایسی ہیں جن کے بارے میں بہت سے لوگ دھوکے میں ہیں ایک صحت دوسری فراغت“
نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا کہ فرصت و فراغت کو مشغولیت سے پہلے غنیمت سمجھو(مشکوٰۃ شریف)

احادیث کا ایک ضخیم ذخیرہ موجود ہے جو وقت کی اہمیت اور غفلت سے اجتناب کے بارے میں احادیث کی کتب میں ہے اس سے صرف نظر کرتے ہوئے اسلاف کے اقوال پڑھیے جو وقت کی اہمیت بتلا رہے ہیں۔

حضرت ابوبکر صدیقؓ یہ دعا فرمایا کرتے تھے :
ترجمہ: ”اے اللہ! ہمیں شدت میں نہ چھوڑیے، اور ہمیں غلفت کی حالت میں نا پکڑیے، اور ہم کو غفلت والوں میں نا بنایے“

سیدنا عمرفاروقؓ فرمایا کرتے تھے:
میری طبیعت پر یہ بات بڑی گراں گزرتی ہے جب میں کسی کو فارغ دیکھتا ہوں، نہ وہ دین کے کسی کام میں ہے، نہ ہی دنیا کے کاموں میں“
حضرت علیؓ فرماتے تھے: ” یہ ایام تمہاری عمروں کے صحیفے ہیں،اچھے اعمال سے ان کو دوام بخشو! مشہور بزرگ حسن بصریؒ فرماتے تھے” اے ابن آدم! تو ایام ہی کا مجموعہ ہے جب ایک دن گزر جاۓ تو سمجھ تیرا ایک حصہ گزرگیا“

وہ لوگ وقت شناس تھے چونکہ امام احمد بن حنبلؒ کے بارے میں آتا ہے ان کی تالیفات ایک ہزار کے قریب ہیں، ابن جریرؒ نے اپنی زندگی میں تین لاکھ اٹھاون ہزار اوراق لکھے،علامہ باقالانی نے صرف معتزلہ کے رد میں ستّر ہزار اوراق لکھے،امام غزالیؒ نے اٹھتر کتابیں لکھیں جن میں صرف ”یاقوت التأویل“ چالیس جلدوں میں ہے، امام ابن جوزیؒ نے اتنی احادیث لکھی کہتے ہیں ان کو آخری غسل دیتے وقت وہ پانی کافی ہوگیا جو حدیث لکھتے ہوۓ ان کے قلم بنانے میں جمع ہوتا تھا،ابوالوفإ بن عقیل کے بارے میں مشہور ہے کہ اسّی 80 فنون کے متعلق کتب لکھیں، مشہور مسلمان فلسفی اور طبیب ابن سینا کی تصانیف میں سے ”الحاصل والمحصول“بیس جلدوں میں، الانصاف بیس جلدوں میں، الشفا اٹھارہ جلدوں میں،امام سرخسی کی مبسوط تیس جلدوں، صاحب ہدایہ کی کفایۃ المنتہی اسی جلدوں میں، ہدایہ اسی کی تلخیص کی ہے، مولانا خلیل احمد سہارن پوری کی بذل المجہود چودہ جلدوں میں، لسان العرب دس جلدوں میں، نویں صدی کے مشہور محدث علامہ ابن حجر عسقلانی کی بخاری شریف کی شرح چودہ جلدوں میں ہے، اس طرح دیگر کئی تصنیفات کئی کئی جلدوں میں ہیں۔

تصنیفی میدان میں مسلمان مصنیفین کی تصنیفات جو آج باقی ہیں یہ ایک حصہ ہے ، باقی ایک بڑا ذخیرہ وہ ہے جو حوداث زمانہ کی نذر ہوگیا، تاتاریوں نے جب بغداد کا رخ کیا تو انسانوں کی تباہی کے ساتھ ساتھ علم کے وہ عظیم بڑے بڑے کتب خانے بھی دریا برد کردیے، کہا جاتا ہے اتنی کتب تھی کہ ان کی روشنائی سے ایک عرصہ تک دجلہ کا پانی سیاہ رہا۔

ہم آج جس دور سے گزر رہے ہیں اس میں علم وعمل کا جو قحط ہے وہ اصحاب فہم و ذکاء سے پوشیدہ نہیں، طلباء و اساتذہ آج درس وتدریس سے دور وقت کی اہمیت کے احساس سے عاری،ذوق ِ مطالعہ سے خالی اور قلم وقرطاس سے بے گانہ نظر آتے ہیں۔
ہم ہروقت قہوہ خانوں،سینما ہالوں، بے کار نجی مجلسوں اور رقص وسرور کی محفلوں میں وقت ضائع کرتے ہیں،ہمارا کتنا ہی قیمتی وقت نکتہ چینی،بہتان، غیبت، اور بے تحاشا سونے میں گزر جاتا ہے، اخلاق، علوم وفنون، ٹیکنالوجی، سائنس،معاشیات اور تسخیرات وایجادات میں ہم اقوام عالم سے پیچھے رہ گئے ہیں، اس کی بنیادی وجہ وقت کا ضیاع ہے، اگر آج ترقی کی منازل طے کرنا چاہتے ہیں تو ہمیں بحیثیت ایک ذمہ شہری وقت کی قدر کرنا ہوگی ورنہ بقول امام شافعی رحمہ اللہ وقت ایک تلوار ہے اسے کاٹ ڈالو ورنہ یہ تمہیں کاٹ ڈالےگی، اور یہ حقیقت ہے کہ جو وقت کی قدر نہیں کرتا پھر وقت اس کی قدر نہیں کرتا۔

About Babar

Babar
I am Babar Alyas and I’m passionate about urdu news and articles with over 4 years in the industry starting as a writer working my way up into senior positions. I am the driving force behind The Qalamdan with a vision to broaden my city’s readership throughout 2019. I am an editor and reporter of this website. Address: Chak 111/7R , Kamalia Road, Chichawatni, Distt. Sahiwal, Punjab, Pakistan Ph: +923016913244 Email: babarcci@gmail.com https://web.facebook.com/qalamdan.net https://www.twitter.com/qalamdanurdu

2 comments

  1. Avatar

    I’ve been surfing online more than three hours today, yet I never found any interesting article like yours.
    It’s pretty worth enough for me. In my opinion, if all website owners
    and bloggers made good content as you did, the net will be much more useful than ever before.
    I’ve been browsing online more than 3 hours today, yet I never found any interesting article like yours.
    It’s pretty worth enough for me. In my opinion, if all
    webmasters and bloggers made good content as you
    did, the internet will be much more useful than ever before.
    Does your blog have a contact page? I’m having a
    tough time locating it but, I’d like to shoot
    you an e-mail. I’ve got some suggestions for your blog you might be
    interested in hearing. Either way, great blog and I look forward
    to seeing it develop over time. http://apple.com/

  2. Avatar

    Hello all, here every person is sharing these know-how,
    therefore it’s nice to read this web site, and I used to pay a visit this website every day.

    binaere.org

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے