Home / پاکستان / تحصیل بورے والہ کے سیاسی رنگ ۔۔

تحصیل بورے والہ کے سیاسی رنگ ۔۔

تحصیل بورے والہ کے سیاسی رنگ ۔۔
تحریر
مہر اعجاز احمد

تحصیل بورے والہ میں پاکستان تحریک انصاف کی سیاست میں سیاسی اکھاڑ پچھاڑ اور سیاسی گٹھ جوڑ انیوالے بلدیاتی الیکشنوں کے لیے شروع ہو چکے ہیں اور ہفتہ رہفتہ میں ہی زبردست سیاسی تبدیلیاں وقوع پذیر ہوئیں جن میں ایک سیاسی گھرانے کو زبردست سیاسی طریقے سے پاکستان تحریک انصاف کے ایک اجلاس میں ووٹنگ کے بعد ندامت بھی اٹھانا پڑی یہ سیاسی تبدیلیاں اور سیاسی گٹھ جوڑ اس وقت شروع ہوئے جب سابق تحصیل ناظم چوہدری عثمان احمد وڑائچ اسلام آباد میں پاکستان تحریک انصاف کی اعلی قیادت کے علاؤہ بورے والا سے بھی گئے ہوئے پی ٹی آئی کے سیاستدانوں کی موجودگی میں پاکستان تحریک انصاف میں شامل ہوئے لیکن جٹ گروپ کی جانشین محترمہ عائشہ نذیر جٹ جنہوں نے سابقہ جنرل الیکشن میں ٹی وی کے نشان پر آزاد حیثیت کے ساتھ چوہدری عثمان احمد وڑائچ کے ساتھ ملکر الیکشن لڑا تھا زرائع کے مطابق محترمہ عائشہ نذیر کو اسلام آباد اجلاس میں بورے والہ سے گئے ہوئے کئی ایک پی ٹی آئی کے سیاست دانوں کی وہاں موجودگی پسند نہ آئی حالانکہ ان مہمانوں کو باوثوق ذرائع کے مطابق چوہدری عثمان احمد وڑائچ نے مدعو کیا تھا بہرحال اسی بات کو لیکر جٹ گروپ اور چوہدری عثمان احمد وڑائچ کے درمیان سیاسی خلیج حائل ہونا شروع ہوگئی اور اس کی ایک وجہ وہاں پر بورے والہ سے چوہدری عثمان احمد وڑائچ کی دعوت پر پہنچے ہوئے چوہدری ارشاد احمد ارائیں کی تقریر بھی ہو سکتی ہے اور اس کے ساتھ ہی یہ خبریں بھی گردش کرنے لگ گئیں کہ انیوالے بلدیاتی الیکشنوں میں چوہدری ارشاد احمد ارائیں تحصیل بورے والہ مئیر کے امیدوار جبکہ چوہدری عثمان احمد وڑائچ تحصیل بورے والہ ناظم کے امیدوار ہونگے جبکہ اس پہلے پی ٹی آئی ہی کے راہنما حاجی شہباز احمد ڈوگر بھی تحصیل ناظم کے امیدوار بننے کا عندیہ دے چکے ہیں چونکہ پاکستان تحریک انصاف میں سیاستدان دھڑا دھڑ شامل ہو رہے ہیں تو ایسے میں یہ اندازہ لگانا ناممکن نہ ہے کہ ایک سیٹ پر ایک سے زائد سیاستدان ٹکٹ لینے کے امیدوار ہو سکتے ہیں اسلام آباد سے واپسی پر محترمہ عائشہ نذیر جٹ نے اس نئے بننے والے سیاسی اتحاد اور سیاسی گٹھ جوڑ کو پسند نہ کیا اور اپنے گروپ سے امیدوار سامنے لانے کا بھی عندیہ اپنے سیاسی ڈیرہ کے ورکروں کو دیے دیا مگر چونکہ یہ نئے بننے والے سیاسی اتحاد کی ابھی تک خبریں ہی ہیں اور دونوں طرف سے کسی بھی سیاست دان نے ابھی تک اس کی با ضابطہ طور پر تردید یا تائید نہ کی ہے تو مفروضوں پر کوئی بھی رائے قائم کرنا بھی سیاسی نا بالغی ہو سکتی ہے اور ویسے بھی محترمہ عائشہ نذیر جٹ جب سے پاکستان تحریک انصاف کی سنیر نائب صدر جنوبی پنجاب کا عہدہ ملا ہے اسی وقت سے ہی انہوں نے پی ٹی آئی کے دیرنہ ورکروں اور کارکنان سے کوئی ایک میٹنگ بھی درکنار ان سے ملنا تک گورا نہ کیا ہے اور محترمہ عائشہ نذیر جٹ کے قریبی ذرائع کے مطابق محترمہ عائشہ نذیر جٹ شادی کے بعد خانہ داری میں مصروف ہو گئی ہیں جس کی وجہ وہ تنظیمی معاملات اور حلقہ کو وقت نہ دیے پا رہی ہیں لیکن اس سارے سیاسی گھن چکر کے بعد اس نئے بننے والے سیاسی اتحاد اور سیاسی گٹھ جوڑ کا جادو پاکستان تحریک انصاف تحصیل بورے والہ کی سیاست کے سر چڑھ کر بولنا شروع ہو چکا ہے اسی طرح ذرائع کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کی ضلعی کمیٹی کے صدر اور جنرل سیکرٹری کے چناؤ کے لیے ایک تنظیمی اجلاس بھی ہفتہ ہفتہ لاہور میں منعقد ہوا جس میں پاکستان تحریک انصاف کی تنظیمی عہدیدار وں نے شرکت کی اس اجلاس میں ضلع وہاڑی کی صدرات کے لیے چوہدری طاہر انور واہلہ کے نام سمیت تمام ضلعی اور تحصیل کی تنظیموں کے نام سنیر نائب صدر جنوبی پنجاب محترمہ عائشہ نذیر جٹ نے پیش کردیے حالانکہ پارٹی اصولوں کے مطابق پہلے ضلعی صدر اور جنرل سیکرٹری کا چناؤ عمل میں لایا جاتا ہے اور بعد میں ضلعی صدر اور ضلعی جنرل سیکرٹری مل کر ضلع اور تحصیلوں کی تنظیموں کا چناؤ عمل میں لاتے ہیں مگر محترمہ شاید لاعلمی یا پھر کسی اور وجہ سے تمام ضلعی اور تحصیل کی تنظیموں کے نام جو کہ ان کے اپنے ورکروں کے ہی تھے اکٹھا ہی اجلاس میں پیش کر گئیں لیکن جب صدر جنوبی پنجاب نور خاں بھابھہ نے ضلعی جنرل سیکرٹری کے لیے چوہدری عمران ارشاد ایڈوکیٹ کا نام دیا تو محترمہ عائشہ نذیر جٹ نے چوہدری عمران ارشاد ایڈوکیٹ کے نام پر اعتراض کر دیا اجلاس میں چوہدری عمران ارشاد کے نام پر فوری طور ووٹنگ کی گئی آٹھ ووٹ میں سے سات ووٹ چوہدری عمران ارشاد ارائیں کے حق میں پڑے جبکہ ایک ووٹ ان کے خلاف پڑا جو کہ محترمہ عائشہ نذیر جٹ کا تھا اجلاس کے اختتام پر ضلعی صدر چوہدری طاہر انور واہلہ اور ضلعی جنرل سیکٹری چوہدری عمران ارشاد ارائیں کے نام فائنل کرکے اعلی قیادت کو دے دیے گئے تھے اس طرح اس بڑے سیاسی گروپ کی جانشین کو یہاں پر بھی غلط سیاسی فیصلوں کی وجہ ندامت اٹھانی پڑی بہرحال اب انیوالے دنوں میں دیکھتے ہیں کہ پاکستان تحریک انصاف کی سیاست میں کیا کیا نئے سیاسی فیصلے اورسیاسی گٹھ جوڑ ہوتے ہیں اور کون ضلعی صدر اور کون جنرل سیکرٹری بنتا ہے اور کارکنان کو تنظیم سازی میں کتنا حصہ ملتا ہے ۔۔۔۔۔
مہر اعجاز احمد کالم نگار بورے والہ

About Babar

Babar
I am Babar Alyas and I’m passionate about urdu news and articles with over 4 years in the industry starting as a writer working my way up into senior positions. I am the driving force behind The Qalamdan with a vision to broaden my city’s readership throughout 2019. I am an editor and reporter of this website. Address: Chak 111/7R , Kamalia Road, Chichawatni, Distt. Sahiwal, Punjab, Pakistan Ph: +923016913244 Email: babarcci@gmail.com https://web.facebook.com/qalamdan.net https://www.twitter.com/qalamdanurdu

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے