Home / پاکستان / پڑھ لیا ہو گا!

پڑھ لیا ہو گا!

انتخاب
ڈاکٹر عامر میر

ڈی آئی جی بہاولپور نے اپنے عملے سے خطاب کرتے ہوئے جو کہا۔آپ نے پڑھ ہی لیا ہو گا؟نہیں پڑھا تو فرماتے ہیں کہ “جملہ ملازمین کو حکم دیتا ہوں کہ نماز کی پابندی کریں۔جو نماز کی پابندی نہیں کرے گا اُس کو اجازت ہے کہ اپنا تبادلہ کرا کے چلا جائے۔کیونکہ جو میرے رب کا نہیں وہ میرا کیا بنے گا”۔
پہلی بات نماز ہر مسلمان پہ فرض ہے۔پڑھے گا تو رب سے فائدہ لے گا۔ناں پڑھنے والا جانے و رب جانے۔میں اور آپ مداخلت نہیں کر سکتے۔
دوسری بات کیا نماز زبردستی پڑھوائی جا سکتی ہے؟جی ہاں پڑھوائی جا سکتی ہے اگر ملک کے آئین و قانون میں ایسا لکھا ہے تو۔
تیسری بات بھی اسی اصول پہ ہے۔اگر تو پولیس کے اپنے محکمانہ قوانین میں لکھا ہے کہ ملازمین کو زبردستی نماز پڑھائی جا سکتی ہے تو ڈی آئی جی صاحب درست کہہ رہے ہیں اور ناں پڑھنے والے کے خلاف محکمانہ کاروائی بلکل کی جا سکتی ہے کہ اُس نے ڈیپارٹمنٹ کے قوانین و ضوابط کی خلاف ورزی کی ہے۔اگر ملکی آئین و پولیس کے قوانین و ضوابط میں زبردستی نماز پڑھوانے کے آرڈرز نہی ہیں تو ڈی آئی جی صاحب جو کہہ رہے ہیں اُسے نرم ترین الفاظ میں قانون کی خلاف ورزی،دھونس و نیک بننے و کہلائے جانے کا بخار کہا جا سکتا ہے۔موجودہ ملکی و پولیس قوانین کے مطابق آپ صرف نماز کے لئے بلا سکتے ہیں جو آذان کی صورت میں بھی بلایا جاتا ہے لیکن زبردستی نہیں پڑھوا سکتے۔اللہ تعالی ڈی آئی جی صاحب و ڈی آئی جی صاحب جیسوں کے حال پہ رحم فرمائے اور عقل سلیم عطا کرے۔
آمین۔

About Babar

Babar
I am Babar Alyas and I’m passionate about urdu news and articles with over 4 years in the industry starting as a writer working my way up into senior positions. I am the driving force behind The Qalamdan with a vision to broaden my city’s readership throughout 2019. I am an editor and reporter of this website. Address: Chak 111/7R , Kamalia Road, Chichawatni, Distt. Sahiwal, Punjab, Pakistan Ph: +923016913244 Email: babarcci@gmail.com https://web.facebook.com/qalamdan.net https://www.twitter.com/qalamdanurdu

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے