Home / کالم / ہم ناشکرے لوگ۔۔

ہم ناشکرے لوگ۔۔

ازقلم
غلام شبیر منھاس
🌺🌺🌺🌺🌺
کل میں اسلام آباد سے واپس آرہا تھا تو رات کافی بیت چکی تھی۔اور بھوک بھی اچھی خاصی لگ رہی تھی تو روات کے قریب ایک ہوٹل پہ کھانے کیلئے رک گیا۔ ہوٹل کے عقب میں بنے لان میں بیٹھا اور کھانے کا کہہ کر انتظار کرنے لگا۔ ویٹر آیا اور پانی کی بوتل سامنے رکھ گیا۔ میں سوچنے لگا کہ یہ جس کو میں نے اس لیئے پینا ھے کہ یہ میرے نصیب میں لکھا جا چکا ھے۔۔۔مگر یہ پانی کس جگہ سے نکلا ہو گا۔ پھر شہر کی کسی کمپنی کے واٹر فلٹریشن کے پراسس سے گذرا ہوگا۔ پھر مارکیٹ میں آیا ہوگا۔۔مارکیٹ والوں سے ان ہوٹل والوں نے اٹھایا ہوگا۔ اور آج جب جس وقت میرے نصیب میں اسکو پینا تھا انھوں نے اس سے لا کےمیرے سامنے رکھ دیا۔۔
ابھی میں اسی سوچ میں غوطہ زن تھا کہ ویٹر دوبارہ آیا اور سلاد کی ٹرے میرے سامنے رکھ گیا۔۔یہاں سے میں پھر سوچ کے اسی سمندر میں اترتا چلا گیا۔۔یہ پیاز۔۔یہ کھیرا۔۔یہ ٹماٹر۔۔کہاں سے ان کے بیج خریدے گئے ہوں گے۔۔کس کس علاقہ کی کن کن زمینوں میں انکو لگایا گیا ہوگا۔ کب کب انکو توڑ کر کن کن منڈیوں میں لایا گیا ہوگا۔۔ان منڈیوں سے کس کس تاجر نے انکو خریدا ہوگا۔ اور پھر کس کس تاجر سے ان ہوٹل والوں نے یہاں لا کےمیرے لیئے رکھا ھوگا۔ اور پھر آج جب میرا نصیب اور متیعن وقت برابر ہوا تو میں یہاں آکر بیٹھ گیا اور انھوں نے یہ سب کچھ۔۔جس پہ میری مہر لگی تھی ۔۔۔لاکے میرے سامنے رکھ دیا۔۔
اتنے میں دہی ریتہ بھی آگیا۔۔یار کمال ھے۔۔کس نے بھینس پالی۔۔کہاں سے دودھ آیا۔۔کس نے دہی بنائی۔۔اور یہ گھومتی گھماتی میرے ٹیبل پہ آپہنچی۔۔
ابھی میں اس دہی ریتہ کو دہکھ رھا تھا کہ ویٹر روٹی اور سالن بھی لے کر آگیا۔۔کس نے گندم بیجی۔۔کہاں بیجی۔۔کس نے کاٹی۔۔کس نے تھریشر لگائی۔۔کس نے منڈی میں لائی۔۔کون خریدار بنا۔۔کس نے چکی یا فلور مل پہ بجھوائی۔۔کس نے آٹا بنایا۔۔۔کس نے پیک کیا۔۔کس نے مارکیٹ تک لایا۔۔کون وہاں سے اٹھا کر اس ہوٹل تک لایا۔۔اور آج میں اسکو کھانے پہنچ گیا۔۔۔کیا کمال کی قدرت نہیں ھے۔۔کیا میرے رب کا نظام کمال کا نہیں ھے۔۔۔
اور سالن۔۔۔گوشت تھا۔۔میں بوٹی کھا رھا تھا اور سوچ رھا تھا کہ یہ بکری کہاں پیدا ہوئی۔۔کہاں پلی بڑھی۔۔کن کن مراحل سے گذری اور آج اس کا اتنی مقدار میں گوشت چونکہ میرے حصہ میں لکھا جا چکا تھا سو میں کھا رھا تھا۔۔۔مگر صرف میں کہاں کھا رھا تھا۔۔۔اس میں سے دو عدد بوٹیاں روات کی ایک بلی کے نصیب میں بھی تھیں۔۔وہ اچانک کسی طرف سے نمودار ہوئی اور سیدھی میرے ٹیبل کے قریب آکے یوں آواز دی جیسے برسوں کی شناسائی ہو۔۔۔مجھے سمجھ آگئی کہ یہ سارا سالن میرا نہیں۔۔چنانچہ اس میں سے اس کے حصہ کی دو بوٹیاں میں نے اس کے حوالہ کردیں۔۔اس نے وہ کھایئں اور غائب ہو گئی۔۔۔
میرے رب کا عجیب و عظیم نظام ھے۔۔ھماری سوچوں سے بالاتر۔۔ھماری سمجھ سے بہت دور۔۔۔اس نے دنیا کی ہرچیز کو ھمارے لیئے بنایا۔۔اورپھر وقت مقررہ پہ ہمیں عنایت کر دیئں۔۔ھم خواہ سفر میں ہوں یا ہجر میں۔۔۔سورج چاند اور ستاروں سے لے کر۔۔۔رب کی زمیں ھمارے پاوں کا ساتھ نہیں چھوڑتی۔۔اور۔رب کا آسمان اپنا سایہ ھم پہ قائم رکھتا ھے۔۔۔ہمارا مقدر۔۔ہماری قسمت میں لکھی ہر چیز ھمارے انتظار میں ھے۔۔اور ان تمام تر نوازشات کے بعد رب کی ڈیمانڈ کیا ھے۔۔؟ بندگی۔۔ اپنے رب سے وفاداری۔۔بلا شرکت غیرے تمام تر مخلوقات سے اعلی و ارفع ماننے کی شرط۔۔ صرف اپنے سامنے سجدہ کرنے کا۔۔اور مسلسل سجدہ ریز ہونے کی ڈیمانڈ بس۔۔۔
مگر بات جب بندگی کی آتی ھے تو ھم بدقسمتی سے گھر میں پالے گئے پالتو کتے کا مقابلہ بھی نہیں کر پاتے۔۔جو ہم سے کبھی بھوک پیاس کا مطالبہ نہیں کرتا۔۔جو دیں۔۔جب دیں۔۔ اور جتنا دیں چپ کر کے کھا لیتا ھے۔۔ھم اس کے سامنے گوشت کھا رھے ہوتے ہیں مگر وہ باوجود طلب اور بھوک کے ھم پہ چھبٹتا نہیں۔۔مگر سردیوں کی یخ بستہ راتوں میں ٹھنڈے فرش پہ بیٹھا رات بھر ھمارا پہرہ دیتا ھے۔۔۔جبکہ ھم۔۔۔اپنے آقا کے کس قدر وفادار ہیں۔۔اور کس قدر فرمانبردار۔۔۔یہ سوال میں اپنے آپ کیلئے بھی چھوڑے جا رھا ہوں۔۔۔اور آپ سب کیلئے بھی۔۔
خطایئں دیکھتا بھی ھے۔۔عطایئں کم نہیں کرتا۔۔
سمجھ میں کچھ نہیں آتا۔۔وہ اتنا مہرباں کیوں ھے۔۔

About Babar

Babar
I am Babar Alyas and I’m passionate about urdu news and articles with over 4 years in the industry starting as a writer working my way up into senior positions. I am the driving force behind The Qalamdan with a vision to broaden my city’s readership throughout 2019. I am an editor and reporter of this website. Address: Chak 111/7R , Kamalia Road, Chichawatni, Distt. Sahiwal, Punjab, Pakistan Ph: +923016913244 Email: babarcci@gmail.com https://web.facebook.com/qalamdan.net https://www.twitter.com/qalamdanurdu

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے