Home / اسلام / ملت ابراہیمی کے تابع

ملت ابراہیمی کے تابع

*درس قرآن نمبر 101*

*ہم ملت ابراہیمی کے تابع ہیں۔*

*مدرس: محمد عثمان شجاع آبادی*

بسم اللہ الرحمن الرحیم

وَقَالُوا كُونُوا هُودًا أَوْ نَصَارَىٰ تَهْتَدُوا قُلْ بَلْ مِلَّةَ إِبْرَاهِيمَ حَنِيفًا وَمَا كَانَ مِنَ الْمُشْرِكِينَ ( 135 ) بقرہ – الآية 135
اور (یہودی اور عیسائی) کہتے ہیں کہ یہودی یا عیسائی ہو جاؤ تو سیدھے رستے پر لگ جاؤ۔ (اے پیغمبر ان سے) کہہ دو، (نہیں) بلکہ (ہم) دین ابراہیم (اختیار کئے ہوئے ہیں) جو ایک خدا کے ہو رہے تھے اور مشرکوں میں سے نہ تھے
قُولُوا آمَنَّا بِاللَّهِ وَمَا أُنزِلَ إِلَيْنَا وَمَا أُنزِلَ إِلَىٰ إِبْرَاهِيمَ وَإِسْمَاعِيلَ وَإِسْحَاقَ وَيَعْقُوبَ وَالْأَسْبَاطِ وَمَا أُوتِيَ مُوسَىٰ وَعِيسَىٰ وَمَا أُوتِيَ النَّبِيُّونَ مِن رَّبِّهِمْ لَا نُفَرِّقُ بَيْنَ أَحَدٍ مِّنْهُمْ وَنَحْنُ لَهُ مُسْلِمُونَ ( 136 ) بقرہ – الآية 136
(مسلمانو) کہو کہ ہم خدا پر ایمان لائے اور جو (کتاب) ہم پر اتری، اس پر اور جو (صحیفے) ابراہیم اور اسمٰعیل اور اسحاق اور یعقوب اور ان کی اولاد پر نازل ہوئے ان پر اور جو (کتابیں) موسیٰ اور عیسی کو عطا ہوئیں، ان پر، اور جو اور پیغمبروں کو ان کے پروردگار کی طرف سے ملیں، ان پر (سب پر ایمان لائے) ہم ان پیغمروں میں سے کسی میں کچھ فرق نہیں کرتے اور ہم اسی (خدائے واحد) کے فرمانبردار ہیں

ربط
پہلے یہود کے غلط عقاٸد کی تردید تھی اب ان کی ناجاٸز خواہشات کی تردید ہے۔

تفسیر

پہلی آیت مبارکہ میں یہود و نصاری کی تردید کی گیٸ ہے۔یہود و نصاری کی یہ چاہت تھی کہ مسلمان کسی طرح یہود یا نصاری کا مذہب اختیار کر لیں۔اور وہ اس بات پر بضد تھے حضرت ابراہیم علیہ السلام بھی مذہب یہود سے تعلق رکھتے تھے اسی طرح نصاری بھی اسی بات پر بضد تھے کہ وہ مذہب نصاری سے تعلق رکھتے تھے تو اللہ تعالی نے ان کی تردید کر تے ہوۓ فرمایا۔۔۔وَمَا كَانَ مِنَ الْمُشْرِكِينَ۔۔۔۔وہ مشرکین سے تعلق نہیں رکھتے تھے جب کہ یہود و نصاری شرک میں مبتلا ہوگیے تھے۔
اسی طرح ان کی خواہش کی تردید کرتے ہوۓ فرمایا۔۔۔۔قُلْ بَلْ مِلَّةَ إِبْرَاهِيمَ حَنِيفًا۔۔۔۔۔۔ہم ملت ابراہیمی کے پیروکار ہیں ہم شرک جیسی بیماری سے پاک ہیں۔حضرت ابراہیم بھی شرک سے پاک تھے۔

قُولُوا آمَنَّا بِاللَّهِ وَمَا أُنزِلَ إِلَيْنَا۔۔۔۔۔۔
اس آیت مبارکہ میں ان تمام باتوں کی وضاحت فرماٸ ہے کہ مسلمانوں کے بنیادی عقاٸد کیا ہے۔تمام انبیاۓ کرام اور پہلی کتابوں کے بارے میں مسلمانوں کے کیا عقاٸد ہیں؟
تو ان الفاظ میں ان تمام عقاٸد کو بیان فرمایا
کہ ہم اللہ پر ایمان رکھتے ہیں اور اس کتاب پر جو ہماری طرف نازل ہوٸ اور ان کتابوں اور صحاٸف پر ایمان رکھتے ہیں جو حضرت ابراہیم،حضرت اسحاق اور حضرت یعقوب علیھم السلام پر نازل ہوٸیں۔اسی طرح حضرت موسی اور عیسی علیھم السلام پر جو کتابیں نازل ہوٸیں ان پر ایمان رکھتے ہیں۔اللہ تبارک وتعالی نے ایسے خوبصورت الفاظ استعمال فرماۓ ہیں جس سے وہ تمام تحریف شدہ کتابیں نکل گٸیں جن میں بعد میں چھیڑ چھاڑ کی گٸی ہے۔
اور آخر میں مسلمانوں کا مقصد حیات بیان کیا گیا کہ ہم تو اللہ کے فرمانبردار ہیں ہمارا مقصد ہی فرمان الہی کی تابعداری ہے۔
اب ہمارا یہ فرض ہے کہ اپنے مقصد حیات کو یاد رکھیں اور اللہ اور رسول اللہ ﷺ کی تابعداری کریں۔

About Babar

Babar
I am Babar Alyas and I’m passionate about urdu news and articles with over 4 years in the industry starting as a writer working my way up into senior positions. I am the driving force behind The Qalamdan with a vision to broaden my city’s readership throughout 2019. I am an editor and reporter of this website. Address: Chak 111/7R , Kamalia Road, Chichawatni, Distt. Sahiwal, Punjab, Pakistan Ph: +923016913244 Email: babarcci@gmail.com https://web.facebook.com/qalamdan.net https://www.twitter.com/qalamdanurdu

One comment

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے