Home / کالم / غم حسینؑ

غم حسینؑ

غم حسینؑ اور اسکی افادیت
تحریر و تحقیق :
سجاد حسین
📕📕📕📕📕
علم النفس میں جذبات کے متعلق ایک اصول ہے کہ خوشی کے جذبات کو باقی رکھنے کی کوشش کی جاتی ہے اور تکلیف کے جذبات کو کم کرنے کی کوشش کی جاتی ہے، یہ قطعی امر ہے کہ کوئی صدمہ دیر پا نہیں ہوتا لیکن غم حسین ابن علیؑ کیسا الم ہے کہ چودہ برس ہو چکے پھر بھی کسی طرح کم نہیں ہوتا بلکہ ہر سال ترقی کرتا جاتا ہے …
حقیقت یہ ہے کہ اس واقعہ کی حقانیت اور للّہیت ہے جو مقناطیسی جذب کا اثر دکھا رہی ہے ، جس روز شہادت امام ہوئی تقریبا چودہ سو برس گزر جانے پر بھی تازہ ہے اور یونہی رہے گا،
یہی وہ غم ہے جس میں از وقوع وقعہ حضرت خاتم الانبیاؐ ہی نہیں انبیا سلف بھی روئے ہیں جس سے بشر ہی نہیں شجر و ہجر بھی متاثر ہوئے ہیں،
آج تک حسینؑ اور انکے جانثاروں کے غم میں جتنے آنسو بہائے جا چکے ہیں اگر وہ جمع کیے جائیں تو بلاشبہ دریا بہ سکتا ہے ،
حقیقت بشری ہے کہ ایک درد ناک واقعہ پر روتے روتے قلب میں دوسرے دردناک واقعات کا پورا اثر لینے کی صلاحیت بہت کم ہوتی ہے لیکن گریہ حسینی میں یہ صلاحیت موجود ہے گویا اس صفت خاص کی نشوونما کا مکمل انتظام امام حسینؑ کے گریہ میں پوشیدہ ہے،
جسوقت تک نفس کی تربیت نہ کی جائے رقعت قلب کا بہترین ذریعہ گریہ حسینؑ ہے ، گریہ اسی کی مصیبت پر آتا ہے جس سے محبت ہو، محبت ایک ایسی قوی جذبہ ہے کہ اگر خالص ہو تو پیروی اور تاسی پر مجبور کرتا ہے ، سیدالشہدا امام حسینؑ اخلاق حسنہ کے بہترین نمونہ تھے اور بلاشبہ مصائب حسینؑ کے ہر ہر واقعہ میں اخلاق حسنہ کا کوئی نہ کوئی پہلو موجود ہے، جو وسیلہ نجات ہے ،
سید الشہدا امام حسینؑ نے حق کی سر بلندی کیلیے تاریخ انسانی کی سب سے بڑی جنگ لڑی اور اسکی پاداش میں مصائب کا سامنا کرنا پڑا، ان بے مثال مصائب کا تذکرہ رقت قلب کا بہترین وسیلہ ہیں جس سے قلب انسانی کی کثافتیں زائل ہو کر خصائص حسنہ کی نشوونما کا موجب بنتی ہیں جس سے ظلم سے نفرت ، ظلم سے بے زاری اور ترویج و امن کی راہ ہموار ہوتی ہے اور اعلی اقدار پروان چڑھ کر شرف انسانی کی پاسداری کے احساسات کو اجاگر کرتی ہیں اور یہ سب کچھ ثمر ہے امام حسینؑ کی عظیم النظیر قربانی کا جس سے قیادت تک نسل انسانی فیضیاب ہوتی رہے گی،
لاکھوں درود ہوں فرزند رسولؐ امام حسینؑ پر جنکا ذکر فلاح انسانی کا ضامن ہے

About Babar

Babar
I am Babar Alyas and I’m passionate about urdu news and articles with over 4 years in the industry starting as a writer working my way up into senior positions. I am the driving force behind The Qalamdan with a vision to broaden my city’s readership throughout 2019. I am an editor and reporter of this website. Address: Chak 111/7R , Kamalia Road, Chichawatni, Distt. Sahiwal, Punjab, Pakistan Ph: +923016913244 Email: babarcci@gmail.com https://web.facebook.com/qalamdan.net https://www.twitter.com/qalamdanurdu

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے