Home / کالم / اصلاح کے مراحل 3″

اصلاح کے مراحل 3″

⁦✍️⁩از قلم
نعیم اختر ربانی

انسان ظاہر و باطن سے مجسم ہے۔ اور حقیقی انسان باطن کہلاتا ہے کیونکہ ظاہری حرکات و سکنات ، صدور و ممنوعات ، اتفاق و اختلافات اور عقائد و اعمال باطن میں پنہاں نظریے کے مطابق ہی ظہور پذیر ہوتے ہیں۔ اگر ان ظاہری اعمال اور واقعات میں کہیں کوئی خرابی اور برائی وجود پکڑے یا سر اٹھائے تو اس کا لازمی نتیجہ اور وجہ یہ ہے کہ باطن میں پڑے ہوئے نظریے کے بیج پر کوئی گرد پڑ چکی ہے۔ نفسانی خواہشات یا دنیائے فانی کی دلکشی نے اس بیج کی بیخ کنی شروع کر دی ہے۔ بیرون یا اندرون ایسے عوامل کار فرما ہیں جو اس تخم اور مادے کو اپنی اصل ، ٹھوس اور بے عیب شکل سے بدل کر کمزوری اور ملاوٹ کی طرف لا رہے ہیں۔ اس لیے اس بنیاد اور فکر و نظریے کی اساس کو جسے اسلامی اصطلاح میں عقائد و ایمان کا نام دیا جاتا ہے پر کام کرنا ہو گا۔ اس آہنی دیوار میں رخنہ ڈالنے والے تمام کار فرما عوامل کا احتساب کر کے راہِ رواں سے ہٹانا ہو گا۔
اس کے لیے ایک شیخ اور رہبر کی ضرورت ہے جو ان عوامل کو سمجھے اور ان کے سدباب کے لیے مناسب نسخہ تجویز کرے تاکہ مریضِ باطن کی مکمل اصلاح ہو سکے۔ خصوصاً اس زمانے میں کہ جب فتن اور مصائب جابجا اور قدم بہ قدم ساتھ چل رہے ہوں ، گناہوں تک رسائی آسان اور سہل ہو ، کفر و الحاد کی طرف سے داد وتحسین کے سلسلے بھی بکثرت اور مستقل ہوں ، روکاوٹیں محدود بلکہ ناپید ہوں ، آزادئ اظہار و اقبال کا پرفتن سلوگن اور طغری اپنے جوبن پر ہو ، لطف ، انعام اور اکرام بھی ہمہ وقت اور ہمہ گیر ہو تو ایک ایسے صالح اور رہبر کی ضرورت وجوب کے درجے تک ہو جاتی ہے کہ جو ان برائیوں اور فتنوں سے بال کی طرح نکال کر لے جائے اور راہِ خدا میں بکھیری گئی کفار و شیاطین کی کانٹے دار جھاڑیوں سے محفوظ رکھے۔
اگر یہ کہا جائے کہ قرآن و سنت کی صورت میں جب راہِ حق کی تعیین اور وضاحت مکمل بلکہ اکمل طور پر موجود ہے۔ ہر صاحبِ علم و فضل اس سے استفادہ کر کے اپنی منزل کے درست تعین کے بعد بحفاظت راہِ خدا پر چل سکتا ہے۔ تو ایسے شخص کو ایک انسان کی انگلی تھام کر چلنے کی ضرورت کیا ہے؟ جو خود بھی خطا کے ڈھیر پر کھڑا ہے۔ اس کا جواب یہ ہے کہ کتابوں میں سیاہ حروف کی صورت میں درج نسخوں کو ازبر کر لینے سے کوئی طبیب جیسا لقب ، فضیلت اور مقام حاصل نہیں کر سکتا۔ بلکہ اس کے لیے لازم ہے کہ وہ ایک ماہر طبیب کی زیرِ نگرانی اتنا وقت گزارے کہ خود ماہر اور کامل ہو جائے تو طبیب کہلائے گا۔ حکیم الامت حضرت مولانا اشرف علی تھانوی رحمۃ اللّٰہ لکھتے ہیں کہ ” مجھے دو سال برسات کے اخیر میں بخار آیا کرتا تھا اور حکیم صاحب قریب قریب ایک ہی نسخہ لکھتے تھے۔ میں نے کہا لاؤ اس کو لکھ لیں جب بخار آئے گا تو اس کو استعماکر لیا کریں گے۔ چنانچہ ایک سال ایسا ہی کیا مگر خاک نفع نہ ہوا۔ آخر کار حکیم صاحب کو بلایا انہوں نے نسخہ لکھا اس کے پینے سے آرام ہوا۔ پھر تحقیق ہوئی کہ اس سال صفراء کے ساتھ بلغم صاحب بھی تشریف لائے ہیں۔ اب اگر میں نے یہ نسخہ بھی نقل کر لیا کہ اس میں بلغم و صفراء دونوں کی رعایت ہے تو اس کا اندازہ کیسے ہوتا کہ اس سال بلغم صفراء سے زیادہ ہے ، مساوی ہے یا کم ہے؟ اس کا صحیح اندازہ تو طبیب ہی لگا سکتا ہے جو نبض کی حالت کو پہچانتا ہو”(شریعت و طریقت ص 61)۔ تو ثابت ہوا کہ ایسے رفیق اور خلیل کا رہبر کی صورت میں ہونا لازمی ہے جو یہ بتائے کہ یہ نسخہ کب ، کتنا اور کیسے استعمال کرنا ہے؟ اگر اس نسخے کے استعمال میں کوئی ایسی تاثیر ہو جو درج شدہ فوائد کے الٹ ہو تو پھر بھی شیخ اور رہبر ہی اس کا بہترین فیصلہ کر سکتے ہیں کہ اس کے لیے کیا نسخہ اکسیر بنے گا؟ چنانچہ حکیم شاہ اختر رحمۃ اللّٰہ فرماتے ہیں کہ ایک مرتبہ حضرت تھانوی رحمۃ اللہ کو ایک مرید نے خط لکھا کہ مجھے ذکر میں روشنی نظر آتی ہے۔ حضرت نے انہیں تحریر کیا کہ آپ فوراً ذکر ملتوی کر دیں ، بادام اور دودھ پیئیں۔ سر میں تیل کی مالش کریں۔ صبح ننگے پاؤں سبزہ پر چلیں اور اپنے دوستوں کے ساتھ خوش طبعی کریں۔ مخلوق سے دور تنہائی میں رہتے ہوئے اور ذکر و فکر کی وجہ سے دماغ میں خشکی بڑھ گئی ہے ( تزکیہ نفس ص 12)۔ اگر کوئی غیر صاحبِ نسبت ہوتا تو معاً یہ خیال کرتا کہ روشنی دراصل نورِ الٰہی کا ایک ٹکڑا ہے جو ذکر کی برکت سے ظاہر ہوا ہے۔
رہبر کی صورت میں رفیق اس لیے بھی ضروری ہے کیونکہ رسول اللہ صلی اللّٰہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا کہ “آدمی اپنے دوست کے دین پر ہوتا ہے سو ذرا دیکھ بھال لیا کرے کہ کس کے ساتھ دوستی کر رہا ہے؟ (ابوداؤد ، ترمذی) جب ایک مصلح اور رہبر کی صورت میں رفاقت کا بہترین مجسمہ ساتھ ہو گا تو خود آدمی بھی اسی کے رنگ میں رنگ جائے گا۔ قرآنِ مجید میں ارشاد باری تعالیٰ ہے کہ ” تو اس بندے کی اطاعت نہ کر کہ جس کے دل کو ہم نے اپنے ذکر سے غافل کر دیا ، اپنی خواہشات کی اتباع کرتا ہے اور اس کا معاملہ حد سے بڑھا ہوا ہے (القرآن)۔ اس فرمانِ خداوندی کی روشنی میں چند صفاتِ شیخ کو اجمالاً ذکر کرتے ہیں تاکہ تلاشِ شیخ میں کوئی غلطی واقع نہ ہو۔ “علمِ شرع سے واقف ہو ، اخلاق ، اعمال اور عقائد میں پابندِ شرع ہو ، صحبتِ صالحین سے مستفید ہو ، تعلیم و تلقین میں امر بالمعروف اور نہی عن المنکر سے مزین ہو ، شہرت درست اور نیک نام ہو ، اس کی صحبت سے دنیا کی بے ثباتی اور آخرت کا خوف دل میں گردش کرتا ہو ، ذاکر ، عامل ، صالح اور مصلح ہو”(از تعلیم الدین ، قصد السبیل ، کمالات اشرفیہ)۔
جب شیخ ان صفاتِ حمیدہ سے متصف ہو گا تو لامحالہ نتیجہ یہ نکلے گا کہ مریدین بھی اس صحبت سے باکمال اور بامراد ہوں گے۔

بقیہ اقساط کے لنکس

1: علم برائے عمل ہی راہِ نجات ہے
https://m.facebook.com/story.php?story_fbid=1381023862081245&id=100005209336550

2: خوفِ الٰہی نیکیوں کی جڑ اور برائیوں میں روکاوٹ
https://m.facebook.com/story.php?story_fbid=1391982434318721&id=100005209336550

3: موت کی یاد نیکیوں کی راغب اور گناہوں میں مانع
https://m.facebook.com/story.php?story_fbid=1403120236538274&id=100005209336550

4: گناہ شناسی کا مزاج
https://m.facebook.com/story.php?story_fbid=1413514472165517&id=100005209336550

5:گناہوں کی ایک بڑی وجہ
https://m.facebook.com/story.php?story_fbid=1436177999899164&id=100005209336550

6: محاسبہ نفس۔۔۔کیوں اور کیسے؟

https://m.facebook.com/story.php?story_fbid=1441929269324037&id=100005209336550

7: اصلاح کے مراحل (پہلا حصہ)
https://m.facebook.com/story.php?story_fbid=1453313198185644&id=100005209336550

8: اصلاح کے مراحل 2
https://m.facebook.com/story.php?story_fbid=1464390830411214&id=100005209336550

فیس بک آئی ڈی کا لنک
https://www.facebook.com/profile.php?id=100005209336550

فیس بُک پیج کا لنک
https://www.facebook.com/Naeem-Akhter-Rabbani-599738687099876/
#نعیم_اختر_ربانی
#naeemakhterrabbani

About Babar

Babar
I am Babar Alyas and I’m passionate about urdu news and articles with over 4 years in the industry starting as a writer working my way up into senior positions. I am the driving force behind The Qalamdan with a vision to broaden my city’s readership throughout 2019. I am an editor and reporter of this website. Address: Chak 111/7R , Kamalia Road, Chichawatni, Distt. Sahiwal, Punjab, Pakistan Ph: +923016913244 Email: babarcci@gmail.com https://web.facebook.com/qalamdan.net https://www.twitter.com/qalamdanurdu

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے