Home / اسلام / حجرہ مبارک اتنا سادہ کیوں تھا؟

حجرہ مبارک اتنا سادہ کیوں تھا؟

📖 *رسالت مآب صلی اللہ علیہ وسلم کا حجرہ مبارک اتنا سادہ کیوں تھا؟ سائنس و ٹیکنالوجی کا شاہکار کیوں نہ تھا؟*
✒️ *سید خالد جامعی مدظلہ*
ــــــــــــــــــــــــ

رسالت مآب صلی اللہ علیہ وسلم کا *حجرہ مبارک* ایک طرف رکھا جائے دوسری جانب عاد، ثمود، قومِ سباء، قومِ فرعون، موہنجودڑو، چین کے محلات علی شان تہذیب و تمدن پر نظر کی جائے تو یہ تہذیب و تمدن اور ان کے آثار رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی آمد کے وقت بھی محفوظ تھے، یہ سوال پیدا ہو سکتا ہے کہ *اللہ تعالٰی نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کو عاد و ثمود جیسی عمارات تعمیر کرنے کا ہنر کیوں نہ دیا؟* مسجدِ نبوی صلی اللہ علیہ وسلم *پتوں اور کھجور کے تنوں* سے تیار کی گئی تھی *ایران و روم کی سلطنتوں کو فتح کرنے والے مسلمانوں کے پاس قرآن کریم کے سوا کوئی کتاب نہ تھی، نہ کتب خانے تھے، نہ سائنس تھی، نہ ٹیکنالوجی، نہ صنعتیں تھیں، نہ سکول، نہ کالج، نہ یونیورسٹی لیکن اس عہد کی دونوں عظیم طاقتیں ان کے چھوٹے چھوٹے تیروں اور نا قابلِ بیان تلواروں سے زیر ہوگئیں* اصل طاقت *کردار* کی طاقت ہے جس سے *روحانیت* پیدا ہوتی ہے *اگر سائنس و ٹیکنالوجی کی ترقی کے بغیر ترقی کا کوئی تصور موجود نہیں ہے تو پھر رسالت مآب صلی اللہ علیہ وسلم سے لے کر انیسویں صدی میں خلافتِ عثمانیہ کے زوال تک ہماری تاریخ زوال کی تاریخ ہے؟* کیونکہ اس عہد میں ہم فراعنہ مصر اور یونان کی تہذیب جیسی *عمارتیں* نہ بنا سکے، خلافتِ اسلامیہ اور *مدینۃ النبی صلی اللہ علیہ وسلم* میں انیسویں صدی تک نکاسی آب کا نظام موجود نہ تھا جبکہ یہ نظام رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی آمد سے ڈھائی ہزار سال پہلے کی تہذیب موہنجودڑو میں موجود تھا، اس اعتبار سے مسلمان تو نا کام ترین تہذیب و تمدن کے وارث ٹھہرے *قرآن کریم نے ہر قوم کی عظمت، جلالت، افادیت، تعمیرات، شان و شوکت کے مرقعے محفوظ کئے لیکن انبیائے کرام علیہم السلام کی عمارات و تعمیرات کے مرقعے محفوظ نہ رکھے، ایک آدھ استثناء کے سوا اس کی کیا وجہ تھی؟* وجہ ظاہر ہے کہ *انبیائے کرام علیہم السلام اور ان کی امتیں حاضر و موجود اور غالب تہذیب و تمدن کو تہس نہس کرنے آتی ہیں اور خوفِ خدا پر مبنی ایک نئی تہذیب اور ایک نئے معاشرے کی تعمیر کرتی ہے*
ــــــــــــــــــــــــــــــ

*تفہیم مغرب فورم* سے مستفید ہونے کےلئے درج ذیل لنکس میں سے ایک پر کلک کیجئے!


https://chat.whatsapp.com/BZnOZTOC8rGFtcPitq7d67

https://chat.whatsapp.com/4hNMVvoqkFb2DZStQXigB7

https://chat.whatsapp.com/GugoESJCylX1ZnsprNnKlU

https://chat.whatsapp.com/Dxr4XY4Cco5AxVULPVYr0T

https://chat.whatsapp.com/K9K0fNFHevH64vKbmNdK0p

https://chat.whatsapp.com/G2Al2PQ8gFIKyQ80TNICQH

https://chat.whatsapp.com/Ke1n53Yr8Jy3P7IHEaBzIz

About Babar

Babar
I am Babar Alyas and I’m passionate about urdu news and articles with over 4 years in the industry starting as a writer working my way up into senior positions. I am the driving force behind The Qalamdan with a vision to broaden my city’s readership throughout 2019. I am an editor and reporter of this website. Address: Chak 111/7R , Kamalia Road, Chichawatni, Distt. Sahiwal, Punjab, Pakistan Ph: +923016913244 Email: babarcci@gmail.com https://web.facebook.com/qalamdan.net https://www.twitter.com/qalamdanurdu

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے